The news is by your side.

Advertisement

ڈیفنس میں فائرنگ، نوجوان ہلاک، گاڑی میں موجود لڑکی کابیان قلمبند

کراچی : پولیس اہلکاروں کی مبینہ فائرنگ سے جاں بحق ہونے والے نوجوان انتظار کی گاڑی میں موجود لڑکی کا بیان قلم بند کرلیا گیا، پولیس کا کہنا ہے کہ جب ضرورت پڑی تو پھر قانونی طور پربیان لیا جائے گا، عدالت نے آٹھ ملزمان کا سات روزہ ریمانڈ منظور کرلیا۔

تفصیلات کے مطابق ڈیفنس میں گزشتہ روز اے سی ایل سی اہلکاروں کی فائرنگ سے جاں بحق ہونے والےنوجوان انتظاراحمد کیس میں اہم پیش رفت سامنے آئی ہے۔

پولیس نے وقوعہ کے وقت مقتول کی گاڑی سے نکل کر جانے والی لڑکی کا بیان حاصل کرلیا ہے، مدیحہ نامی لڑکی واقعے کے بعد جائے وقوعہ سے رکشہ میں بیٹھ کرچلی گئی تھی۔

اس حوالے سے نیوز کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے ڈی آئی جی ساؤتھ آزاد خان نے کہا کہ انتظارکے ساتھ گاڑی میں ایک لڑکی بھی موجود تھی، یہ لڑکی واقعے کی عینی شاہد ہے، جس کا بیان بھی لے لیا گیا ہے۔

انہوں نے کہا کہ عینی شاہد لڑکی کی سیکیورٹی ہماری ذمہ داری ہے، جب ضرورت پڑی تو قانونی طور پر بھی بیان لیا جائے گا، گرفتار ملزمان اگر غلط بیانی کریں گے تو دیگرشواہد بھی موجود ہیں۔

ڈی آئی جی ساؤتھ نے مزید کہا کہ تفتیش کو آگے بڑھانے کیلئےانتظار احمد کےوالد سے دوبارہ بیان لیا جائے گا، ان کی درخواست کے مطابق ایف آئی آر درج کی گئی ہے۔


مزید پڑھیں: ڈیفنس میں کار پرفائرنگ، نوجوان جاں بحق، چار اے سی ایل سی اہلکار گرفتار


ڈی آئی جی ساؤتھ نے کہا کہ انتظاراحمد کے والد جن لوگوں کا کا نام لے رہے ہیں ان کابیان بھی لیا جائیگا، ادھوری معلومات پرمقدمہ کرتے تو وہ بھی غلط ہوتا، سادہ لباس میں کام کرنے کا بھی ایک ایس او پی ہوتا ہے، تمام اہلکاروں کا سادہ لباس نہیں ہونا چاہیے تھا۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں