The news is by your side.

Advertisement

ترکی اور پاکستان کے مابین وفود کی سطح پر مذاکرات

اسلام آباد : ترکی اور پاکستان کے مابین وفود کی سطح پر مذاکرات ہوئے ، جس میں وزیرخارجہ شاہ محمود قریشی نے کہا کہ  دونوں ملک باہمی مراسم اسٹرٹیجک شراکت داری میں بدل سکتے ہیں۔

تفصیلات کے مطابق وزارت خارجہ میں ترکی اور پاکستان کے مابین وفود کی سطح پر مذاکرات ہوئے ، وزیرخارجہ شاہ محمود قریشی اورترک ہم منصب نے وفود کی قیادت کی۔

وزیر خارجہ نے ہلال پاکستان عطا کیے جانے پر ترک وزیر خارجہ کو مبارکباد دیتے ہوئے کہا ترک صدر کے دورہ پاکستان سےتعلقات مزید مستحکم ہوئے۔

شاہ محمود قریشی نے ترکی میں گیس کے نئے ذخائر کی دریافت پر مبارکباد دی اور کہا کورونا کے پیش نظر کمزور معیشتوں کوسہارا دینے کی ضرورت ہے ، دونوں ملک باہمی مراسم اسٹرٹیجک شراکت داری میں بدل سکتے ہیں ، ترک کاروباری حضرات کیلئے ای ویزے کا اجرا کیا۔

ان کا کہنا تھا کہ مقبوضہ کشمیر میں انسانی حقوق کی سنگین خلاف ورزیاں جاری ہیں، عالمی برادری بھارت پر غیرجانبدار مبصرین کی تعیناتی پر زور دے۔

افغانستان کے حوالے سے وزیر خارجہ نے کہا افغانستان میں قیام امن کے لیے کوششیں کررہے ہیں، افغان رہنما اور ویلوسی جرگہ کے اراکین پاکستان تشریف لائے اور وزیر اعظم عمران خان افغان صدر کی دعوت پر افغانستان گئے اور دو طرفہ تعلقات مستحکم بنانے کیلئے جامع روڈ میپ پر اتفاق کیا گیا۔

شاہ محمود قریشی کا کہنا تھا کہ پاکستان نے کورنوکالاباخ پر آذربائیجان کے موقف کی تائیدکی اور فلسطین کے حوالے سے پاکستان دو ریاستی حل کے موقف پر قائم ہے۔

ترک وزیر خارجہ نے پرتپاک خیر مقدم پر شکریہ ادا کرتے ہوئے باہمی تعاون کیلئے مشترکہ کوششیں جاری رکھنے کا عندیہ دیا اور کہا ہم پاکستان کو اپنا دوسرا گھر سمجھتے ہیں۔

Comments

یہ بھی پڑھیں