The news is by your side.

Advertisement

بُھولنے کی بیماری سے چھٹکارا کیسے ممکن ہے؟

یوں تو انسانی جسم کا ہر عضو قدرت کا انمول عطیہ ہے مگر دماغ کی حیثیت ان سب سے زیادہ اہم ہے۔ دماغ کی وجہ سے انسان خلا کو تسخیر کرنے کے ساتھ ساتھ نئی ٹیکنالوجی تیار کرتا چلا جارہا ہے۔

ایمنشیا ایک ایسا دماغی مرض ہے جس میں انسان اکثر باتیں بھول جاتا ہے، بازار جاتے ہیں تو بھول جاتے ہیں کہ خریدنا کیا تھا۔ امتحانات میں تیاری کرنے کے باوجود آدھا جواب بھول جاتے ہیں۔

کسی سے کافی عرصے بعد ملاقات ہوئی تو اس کا نام یاد نہ آیا۔ کسی کام کے لئے دوسرے کمرے میں گئے لیکن وہاں پہنچنے کے بعد سوچنے لگے کہ کس کام کے لئے آئے تھے۔

لیکن اگر آپ کو بھولنے کی بیماری ہے تو اس کی کئی وجوہات ہوسکتی ہیں۔ آپ ضرورت سے کم نیند لے رہے ہیں، پریشانی کا شکار ہیں، جسمانی مشقت کم ہے یا جینیاتی مسئلہ ہے۔

وجہ خواہ کچھ بھی ہو، لیکن سب سے بڑی حقیقت یہ ہے کہ دماغی صحت میں خوراک کا کردار نہایت اہم ہے اور اگر آپ بھولنے کی شکایت کر رہے ہیں تو یقیناً اپنے دماغ کو درست غذا فراہم نہیں کرپا رہے۔

دماغ کے لیے مفید غذاؤں کا استعمال ہمارے جسم میں خون کی گردش کو بہتر بناتا ہے اور خون زیادہ روانی سے ہمارے دماغ تک پہنچ پاتا ہے۔ جس کے باعث بھولنے کا عارضہ لاحق نہیں ہوتا۔ اب بھولنا بھول جائیں اور یہ سب شوق سے کھائیں۔

آپ کو گوشت پسند ہے تو شوق سے کھائیں، لیکن سبزیوں سے بھی لازمی ناطہ جوڑے رکھیں۔ کیونکہ یہ دماغی صحت کے لیے نہایت مفید ہیں۔ خاص طور پر پتوں والی سبزیاں مثلاً پالک، بند گوبھی اور سلاد پتہ وغیرہ۔

اس کے علاوہ پھل دل، دماغ اورجسم سب ہی کے لیے فائدہ مند ہیں لیکن چیری اور ایسے تمام پھل جن کے بیج گودے کے اندر ہوں، انسانی دماغ کے عمدہ غذا مانے جاتے ہیں۔ مثلاً کیلا، ٹماٹر اور اسٹرابری وغیرہ۔

دماغ کے ساتھ ساتھ ہڈیوں اور بالوں کے لیے مفید اومیگا تھری فیٹی ایسڈ کی وافر مقدار سی فوڈز میں موجود ہوتی ہے اس لیے ہفتہ میں دو یا تین بار اپنے کھانے میں گوشت کی جگہ مچھلی، جھینگا یا کوئی اور سی فوڈ شامل کریں اور اسے فرانی کرنے کے بجائے گرل، بوائل یا بیک کرلیں۔

اگر آپ یہ سب کھانا پسند نہیں کرتے تو اپنے ڈاکٹر سے مشورہ کرکے اس کے متبادل فوڈ سپلیمنٹ کا انتخاب کریں کیوں کہ یہ یادداشت بڑھانے کے لیے اکسیر ہے۔ مچھلی کا تیل بھی آپ کو یہی فائدہ دے سکتا ہے۔

Comments

یہ بھی پڑھیں