The news is by your side.

Advertisement

ڈنمارک انتخابات، سوشل ڈیموکریٹس کو فتح، حکمران جماعت کو شکست

کوپن ہیگن: ڈنمارک میں ہونے والے حالیہ انتخابات میں حزب اختلاف کے پانچ جماعتی اتحاد نے فیصلہ کن فتح حاصل کرلی، حکمران جماعت کو شکست کا سامنا کرنا پڑا۔

غیرملکی خبررساں ادارے کے مطابق ڈنمارک میں ہونے والے حالیہ انتخابات میں حزب اختلاف کے پانچ جماعتی اتحاد نے فتح حاصل کرلی جس کی قیادت بائیں بازو کی جماعت سوشل ڈیموکریٹس کررہی ہے جس نے ڈینش پارلیمنٹ کی 179 میں سے 91 نشستیں جیت لی ہیں۔

جیتنے والے اتحاد سے تعلق رکھنے والی تارکین وطن کی مخالف، بائیں بازو کی جماعت ڈینش ڈیموکریٹک پارٹی نے 21 فیصد سے زائد ووٹ حاصل کیے جس سے وہ پارلیمان کی دوسری بڑی جماعت بن گئی ہے۔

سوشل ڈیموکریٹس پارلیمنٹ میٹ فریڈرکسن کے آٗئندہ ڈینش وزیراعظم بننے کے امکانات روشن ہوگئے ہیں، جو اس وقت 41 سال کی ہیں اگر وہ وزیراعظم بنتی ہیں تو وہ ڈنمارک کی سب سے کم عمر وزیراعظم ہوں گی۔

حکمران جماعت لبرل پارٹی وینسترے سے تعلق رکھنے والے ڈینش وزیراعظم لارس لوکے راسمیوسن نے شکست کا اعتراف کرتے ہوئے سوشل ڈیموکریٹس کو حکومت بنانے کی دعوت دی ہے۔

جیتنے والے اتحاد سے تعلق رکھنے والی تارکین وطن کی مخالف، دائیں بازو کی جماعت ڈینش ڈٰیموکریٹک پارٹی نے 21 فیصد سے زائد ووٹ حاصل کیے جس سے وہ پارلیمان کی دوسری بڑی جماعت بن گئی ہے۔

واضح رہے کہ 2015 کے ڈنمارک کے الیکشن میں وینسترے پر مشتمل اتحاد نے فتح حاصل کی تھی جبکہ حالیہ انتخابات میں سوشل ڈیموکریٹس نے بھی 5 جماعتی اتحاد بنا کر کامیابی حاصل کی ہے۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں