The news is by your side.

ترقیاتی بجٹ سست روی کا شکار

رواں مالی سال کے پہلے 4 ماہ میں ترقیاتی بجٹ سست روی کا شکار ہے۔

وفاقی حکومت کی تعلیم صحت اور غذائی تحفظ کےشعبوں میں عدم دلچسپی سامنے آئی ہے۔ جولائی تا اکتوبر 98 ارب 78 کروڑ سے زائد کے ترقیاتی فنڈجاری کئےگئے۔

منصوبہ بندی کمیشن نےترقیاتی فنڈز کے اجرا کی تفصیلات جاری کر دیں۔ رواں مالی سال ترقیاتی کاموں کا بجٹ 727 ارب روپےمختص ہے جس میں سے 4 ماہ میں تعلیم کیلئے7 ارب میں سےمحض 61 کروڑ جاری ہوئے جب کہ اعلی تعلیم کے لیے 44 ارب میں سے 2ارب 53کروڑ روپےجاری ہوئے۔

صحت عامہ کیلئے 12ارب 65کروڑ میں سےصرف 16کروڑ جاری کئےگئے۔ صوبوں اور فاٹا گلگت بلتستان کیلئے 140ارب میں 12 ارب 70کروڑ روپے جاری ہوئے۔

وزارت داخلہ کیلئے 8 ارب میں سے صرف 40کروڑ روپےجاری کئےگئے۔ فوڈسیکورٹی کیلئے13ارب میں سےصرف 79 کروڑ روپےجاری ہوسکے ۔

ریلوےکو 4ماہ میں 32 ارب میں سےصرف 3 ارب 20کروڑ روپے جاری ہوئے۔ آبی وسائل کی بہتری کیلئے97ارب میں سے اب تک 18ارب روپےدیے گئے۔

منصوبہ بندی کمیشن کے مطابق این ایچ اے کیلئے117 ارب روپے میں 20 ارب جاری ہو سکے۔ کابینہ ڈویژن کیلئے 87 ارب میں سے صرف 7 کروڑ روپےجاری کئےگئے۔

Comments

یہ بھی پڑھیں