لاہور: مرغی کی چربی سے آئس کریم بنانے کا انکشاف، فیکٹری سیل ice cream factory seal
The news is by your side.

Advertisement

لاہور: مرغی کی چربی سے آئس کریم بنانے کا انکشاف، فیکٹری سیل

لاہور: لاہور میں مرغیوں کی چربی اور ملک پاؤڈر سے مضر صحت آئس کریم بنا کر شادی ہالوں اور ہوٹلوں میں فراہم کرنے کا انکشاف ہوا ہے، پنجاب فوڈ اتھارٹی نے چھاپہ مار کر آئس کریم فیکٹری کو سیل کرکے مرغیوں کی چربی برآمد کرلی۔

تفصیلات کے مطابق پنجاب فوڈ اتھارٹی نے شہر میں قائم آئس کریم بنانے والی ایک فیکٹری پر چھاپہ مارا جہاں مضر صحت آئس کریم تیار کی جارہی تھی۔

اطلاعات کے مطابق فیکٹری میں مرغیوں کی چربی اور ملک پاؤڈر کے ذریعے آئس کریم تیار کی جارہی تھی جو کہ مضر صحت ہے جب کہ فیکٹری کے پاس کام کرنے کا لائسنس بھی نہیں تھا جس پر فوڈ اتھارٹی نے فوری طور پر فیکٹری کو سیل کردیا۔

اطلاعات ہیں کہ چھاپے کے دوران فیکٹری سے بڑی تعداد میں مرغیوں کی چربی، ملک پاؤڈر، کیمیکلز اور دیگر اشیا برآمد کرکے ضبط کرلی گئیں۔

ڈی جی فوڈ اتھارٹی نورالامین نے بتایا کہ فیکٹری میں مرغیوں کی چربی اور ملک پاؤڈر سے آئس کریم تیار کی جاتی تھی جو کہ مضر صحت ہے، یہ غیر معیاری آئس کریم شادی ہالز اور ہوٹلوں میں دی جاتی تھی، فیکٹری کو سیل کردیا ہے۔


یہ پڑھیں: پانچ ہزار گدھے کہاں کاٹے گئے؟ گوشت کہاں گیا؟


قبل ازیں پنجاب میں گدھے کے گوشت بڑے پیمانے پر فروخت کا بھی انکشاف ہوا ہے، بڑی تعداد میں گدھے کی کھالیں لاہور سے کراچی بھیجی گئیں جو کراچی میں پورٹ جانے سے قبل ہی پکڑی لی گئیں۔

یہ بھی پڑھیں: پنجاب میں مردہ مرغیوں کے گوشت کی فروخت کا انکشاف

مزید پڑھیںبھارت سے درآمد مرغی کی فیڈ میں سور کی چربی کا انکشاف

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں