The news is by your side.

Advertisement

ڈی جی فرانزک اشرف طاہر کی ملزم عابد کا ڈیٹا لیک ہونے کی تردید

لاہور: ڈی جی فرانزک ڈاکٹر اشرف طاہر نے ملزم عابد کا ڈیٹا لیک ہونے کی تردید کرتے ہوئے کہا کہ فرانزک ایجنسی میں ہزاروں رپورٹس تیار ہوتی ہیں، آج تک کوئی رپورٹ لیک نہیں ہوئی۔

تفصیلات کے مطابق ڈی جی فرانزک سائنس ایجنسی نے اے آروائی نیوز کے نمائندے حسن حفیظ سے خصوصی گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ ڈیٹا بیس نہ ہوتا تو لنک روڈ معاملہ 50سال میں بھی حل نہ ہوتا۔

ڈاکٹر اشرف طاہر نے کہا کہ ملزم عابد کا ڈی این اے ڈیٹا 2013 سے موجود تھا،ملزم کے ڈی این اے پروفائل ہمارے ڈیٹابیس سے میچ کر گئے ۔

ڈی جی فرانزک سائنس ایجنسی کا کہنا تھا کہ زیادتی،سنگین جرائم ،ڈکیتیوں میں ملوث ملزمان کا ڈیٹاجمع کرنا ہوگا،ملزمان کا ڈیٹا جمع کرنا ضروری ہے،اس کے لیے قانون سازی کرنا ہوگی۔

انہوں نے کہا کہ لنک روڈ کیس کی رپورٹ فرانزک سائنس ایجنسی سے لیک نہیں ہوئی،پنجاب فرانزک سائنس ایجنسی پر لگایاگیا الزام غلط ہے۔ڈاکٹر اشرف طاہر کا مزید کہنا تھا کہ فرانزک ایجنسی میں ہزاروں رپورٹس تیار ہوتی ہیں، آج تک کوئی رپورٹ لیک نہیں ہوئی۔

ملزم عابد کی تصویراور معلومات لیک کرنے والے شخص کی نشاندہی کرلی گئی

اس سے قبل گزشتہ روز گجرپورہ زیادتی کیس کے مرکزی ملزم عابد علی کی تصویر اور معلومات فرانزک ڈیپارٹمنٹ سے لیک ہونے کا انکشاف سامنے آیا تھا۔

واضح رہے کہ پنجاب کی پولیس گجرپورہ واقعہ کے مرکزی ملزم عابد کی گرفتاری کے لیے چھاپے مار رہی ہے جبکہ کیس میں نامزد دو ملزمان شفقت اور بالامستری گرفتار ہوچکے ہیں۔

Comments

یہ بھی پڑھیں