The news is by your side.

سعودی عرب ڈیجیٹل ادائیگیوں میں سب سے آگے

ریاض: سعودی عرب کو ڈیجیٹل ادائیگیوں میں دنیا میں سب سے آگے قرار دیا گیا ہے، گزشتہ کچھ عرصے میں مملکت میں ڈیجیٹل ادائیگیاں 4 فیصد سے 97 فیصد تک گئیں۔

اردو نیوز کے مطابق عالمی ڈیجیٹل پیمنٹ فرم ویزا کا کہنا ہے کہ سعودی عرب نے ڈیجیٹل ادائیگیوں کے نظام کو اپنانے میں دنیا میں سب سے تیزی سے ترقی کی ہے۔

ریاض میں فیوچر انویسٹمنٹ انیشیٹیو فورم کے چھٹے ایڈیشن کی سائیڈ لائن پر اپنے خطاب میں ویزا کے علاقائی صدر اینڈریو ٹورے کا کہنا تھا کہ مملکت نے دنیا میں سب سے زیادہ ڈیجیٹل ادائیگی کی شرح نمو دیکھی۔

سنہ 2017 میں تمام ٹرانزیکشنز میں سے صرف 4 فیصد رابطے کے بغیر تھیں، اگر آپ 2021 کے اختتام تک تیزی سے آگے بڑھتے ہیں، تو یہ دنیا میں سب سے زیادہ ڈیجیٹل ادائیگیوں کو اپنانے کا رجحان تھا۔

اینڈریو ٹورے کا کہنا تھا کہ ہم نے سعودی عرب میں اسے 4 فیصد سے 97 فیصد تک جاتے دیکھا ہے۔ ڈیجیٹل ادائیگیاں نہ صرف فزیکل کارڈز کے ذریعے کی جاتی ہیں بلکہ موبائل فون کے ذریعے بھی ان کی ادائیگی ہو سکتی ہے۔

ویزا کے علاقائی صدر کے مطابق یہ یقینی طور پر بہت تیزی سے ترقی کرنے والی مارکیٹ ہے، یہ شاید دنیا اور مشرق وسطیٰ میں سب سے تیزی سے ترقی کرتی ہوئی مارکیٹوں میں سے ایک ہے۔

اینڈریو ٹورے نے مزید کہا کہ مملکت سعودی عرب میں کی جانے والی تمام ادائیگیوں کا 60 فیصد حصہ ڈیجیٹل تھا۔

ان کے مطابق کمپنی سعودی عرب کے مالیاتی ٹیکنالوجی کے شعبے کی مدد کے لیے کئی اقدامات کو آگے بڑھا رہی ہے، فورم کے دوران اس نے مملکت میں اپنے گلوبل انوویشن سینٹر کے آغاز کا اعلان کیا۔

ٹورے کا مزید کہنا تھا کہ انوویشن سینٹر ریاض کا آغاز 2023 کے آخر تک ہو رہا ہے، اس کا مقصد سعودی عرب سے بیرون ملک بھیجی جانے والی 40 ارب ڈالر کی ترسیلات زر کو تیز اور سستا بنانا ہے۔

Comments

یہ بھی پڑھیں