The news is by your side.

Advertisement

احتجاج کے لیے آئے معذور لڑکا لڑکی شادی کے بندھن میں بندھ گئے

حیدرآباد : حیدرآباد پریس کلب کے سامنے احتجاج کرنے والے معذور شخص اور معذور خاتون کے دل ایسے ملے کہ دونوں ازدواجی بندھن میں بندھ گئے شادی بھی پریس کلب کے سامنے ہوئی.

تفصیلات کے مطابق یہ انوکھی شادی حیدر آباد پریس کلب کے سامنے انجام پائی جہاں معذور دلہا اپنی جیون ساتھی کو لینے بارات لے کرپریس کلب ہی آن پہنچا اور بھوک ہڑتال پر بیٹھی معذور دلہن کو بیاہ کر اپنے گھر لے گیا.

ذرائع کے مطابق معذور جوڑا اپنے اپنے مطالبات لے کر حیدرآباد پریس کلب کے باہر بھوک ہڑتال پر بیٹھے تھے جہاں دونوں کی ہونے والی ملاقاتیں محبت میں بدل گئی اور 200 سے زائد دن بھوک ہڑتال پر بیٹھے اس جوڑے نے شادی کا فیصلہ کیا.

اس موقع پردلہا اور دلہن کے والدین نے مسرت کا اظہار کرتے ہوئے شادی کی تقریبات کا انتظام کیا اور بعد ازاں دلہا کو عرفان گھر لے گئے اور شادی کا جوڑا پہنا کر حیدرآباد پریس کلب کے بھوک ہڑتالی پہنچے جہاں دلہن بینش احتجاج پر بیٹھی ہوئی تھیں.

معذوردلہا اپنے اہل خانہ کے ہمراہ بارات لے کر پہنچا تو دلہن کو منتظر پایا جسے اپنے ہمراہ لے کر شادی ہال گئے اور شادی کی رسومات ادا کیں.


اگر آپ کو یہ خبر پسند نہیں آئی تو برائے مہربانی نیچے کمنٹس میں اپنی رائے کا اظہار کریں اور اگر آپ کو یہ مضمون پسند آیا ہے تو اسے اپنی وال پر شیئر کریں۔

Print Friendly, PDF & Email

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں