The news is by your side.

سعودی عرب سے 8ارب ڈالر کی سرمایہ کاری پر پیشرفت نہ ہونے کا انکشاف

سعودی عرب سے8ارب ڈالر کی سرمایہ کاری پر کوئی پیشرفت نہ ہونےکا انکشاف ہوا ہے۔

پبلک اکاونٹس کمیٹی میں انکشاف ہوا کہ آئل ریفائنری پالیسی نہ ہونے سے سرمایہ کاری نہیں ہوسکی۔ سعودی شہزادے نے دورہ پاکستان کےموقع پرآئل ریفائنری میں سرمایہ کاری کااعلان کیاتھا۔

ایڈیشنل سیکرٹری پٹرولیم نے بتایا کہ سعودی عرب نےحب اور گوادر میں آئل ریفائنری قائم کرنا تھی ریفائنری پالیسی کا ڈرافٹ گزشتہ ماہ تیار کیا تاہم مزید 2ماہ درکار ہیں، ریفائنری پالیسی کی تیاری میں ایک سال سےزائدکاوقت لگاہے۔

چیئرمین اوگر نے کہا کہ آخری آئل ریفائنری 2002 میں لگی تھی ریفائنری پالیسی پرانی ہے۔ پٹرولیم ڈویژن حکام نے بتایا کہ آئل ریفائنری کی کپیسٹی نہ ہونے سے 70 فیصد پٹرول اور ڈیزل درآمد کیاجاتا صرف 30فیصد فِنشڈ پراڈکٹس ریفائنریز سےحاصل کی جارہی ہیں۔

ایڈیشنل سیکرٹری پٹرولیم نے کہا کہ سعودیہ عرب سےصرف کروڈ آئل موخر ادائیگیوں پر ملتا ہے سعودی عرب سے پٹرول اورڈیزل موخرادائیگیوں پرنہیں ملتا، پرانےمعاہدوں کےباعث بھارت اور روس سے 100 فیصد سستا تیل خرید سکتا ہے لیکن پاکستان اورروس کےدرمیان سستاتیل خریدنےکاکوئی معاہدہ طےنہیں پایا۔

Comments

یہ بھی پڑھیں