The news is by your side.

Advertisement

یہ شخص ‘کچھ نہ کرنے’ کے کام سے کس طرح کماتا ہے؟ ویڈیو دیکھیں

جاپان میں ایک شخص نے لوگوں کو حیران کر دیا ہے، وہ کچھ نہ کرنے کا معاوضہ وصول کرتا ہے، اور حیرت کی بات ہے کہ لوگ اسے بہ خوشی ‘کچھ نہ کرنے’ کے لیے کرائے پر حاصل کرتے ہیں۔

38 سالہ شوجی ماریموتو شاید دنیا کا واحد آدمی ہے جسے نکمے پن کا بھی پُرکشش معاوضہ ملنے لگا ہے، یعنی کچھ نہ کرو اور لاکھوں کماؤ، ایسی نوکری جہاں کچھ نہ کرنا ہو اور معاوضہ بھی اچھا ملتا رہے، اس خواب کو صرف جاپان کے شہری ہی نے سچ کر دکھایا ہے۔

شوجی شروع ہی سے اپنے جاننے والوں میں ’کچھ نہ کرو‘ (do-nothing) کے نام سے مشہور تھا، تاہم اس نے 2018 میں اس غیر معمولی ملازمت کی شروعات کی، جب وہ بے روزگار ہو گیا تھا، اس نے اپنی خدمات کی تشہیر کے لیے "Do Nothing Rent-a-Man” (’کچھ نہ کرنے والا آدمی کرائے پر دستیاب ہے‘) کے نام سے ایک ٹوئٹر اکاؤنٹ کھولا، اور حیرت انگیز بات یہ ہے کہ اب اس کے 2 لاکھ سے بھی زیادہ فالوورز ہیں۔

دل چسپ بات یہ ہے کہ اس کی ’خدمات‘ حاصل کرنے کےلیے درجنوں افراد نے اس سے رابطہ کرنے لگے ہیں، اور ’کچھ نہ کرنے‘ پر مناسب معاوضے کی پیش کش بھی کرتے ہیں، آج حالت یہ ہے وہ اپنے نکمے پن میں بہت مصروف رہتا ہے جب کہ اس کے مستقل کلائنٹس کی بڑی تعداد کسی نہ کسی مقصد کے لیے اس کی خدمات لیتی رہتی ہے۔

ماریموتو کے کلائنٹ میں کئی موسیقار بھی شامل ہیں، جو اسے بلا کر اسٹوڈیو میں بیٹھنے کا معاوضہ ادا کرتے ہیں، تاکہ وہ کونے میں بیٹھے اور ان کی دھنیں سنتے رہیں۔

ماریموتو نے بتایا کہ کچھ لوگ تنہا ہوتے ہیں، کچھ محسوس کرتے ہیں کہ اکیلے کہیں جانا شرم کی بات ہے، اس لیے وہ چاہتے ہیں کہ کسی کے ساتھ اپنے تاثرات شیئر کریں، اور وہ مجھے کرائے پر حاصل کر لیتے ہیں۔ ایک خاتون بھی شوجی کی مستقل کلائنٹ ہیں، جن کے ساتھ وہ کیفے میں جا کر چائے کافی پیتا ہے، لیکن خاموشی کے ساتھ، وہاں اسے بولنے تک کا کام نہیں کرنا پڑتا۔

شوجی ماریموتو کا کہنا ہے کہ اسے امید نہیں تھی کہ ایسا ہو سکتا ہے، لیکن معلوم ہوا کہ کئی ایسے لوگ ہیں جو تنہا ہیں اور اوہ اپنی تنہائی دور کرنے کے لیے اسے ساتھ بیٹھانے کا معاوضہ ادا کرتے ہیں۔

دی انڈیپنڈنٹ کے مطابق شوجی ایک دن میں تین کلائنٹس بک کرتا ہے اور اب تک وہ 3,000 سے زیادہ جابز مکمل کر چکا ہے۔ ان میں خاموشی سے کافی کا اشتراک کرنا، سڑک پر میوزک پرفارم کرنے والے کو سننا، کسی کے ساتھ ان کی سالگرہ پر کیک بانٹنا، لوگوں کے ساتھ ریسٹورنٹ اور دکانوں میں جانا، اور جھولے کسی کے بیٹھنا شامل ہیں۔ اس نے جن درخواستوں کو ٹھکرایا ان میں گھروں کی صفائی، کپڑے دھونے، عریاں پوز کرنا اور کسی کا دوست بننا شامل ہیں۔

Comments

یہ بھی پڑھیں