The news is by your side.

Advertisement

بھارت میں ڈاکٹرز درندے بن گئے، مریضہ سے زیادتی کرکے مار ڈالا، دو ملزمان گرفتار

بہار : بھارت میں دو ڈاکٹروں نے 25 سالہ لڑکی کو زیادتی کا نشانہ بنا دیا، مریضہ کو اسقاط حمل کے عمل سے گزرنے کے بعد اسپتال لایا گیا تھا، پولیس نے دونوں ملزمان کو حراست میں لے لیا۔

بھارت میں جنسی بے راہ روی خطرناک حد تک بڑھ گئی، مسیحاؤں نے اپنے مقدس پیشے کا بھی خیال نہ کیا، کورونا وائرس کی 25سالہ مبینہ مریضہ کو زیادتی کرکے قتل کرڈالا، پولیس نے دونوں ڈاکٹروں کو گرفتار کر کے مقدمہ درج کرلیا۔

بھارت کے ضلع گایا کے ایک اسپتال میں25سالہ لڑکی کے ساتھ زیادتی کا واقعہ پیش آیا ہے, متاثرہ لڑکی کو کرونا وائرس کے شبے میں آئسولیشن وارڈ میں رکھا گیا تھا۔

اسپتال میں کچھ دن قیام اور ٹیسٹوں کے بعد اس بات کی تصدیق ہو گئی کہ لڑکی کرونا وائرس سے متاثرہ نہیں ہے تاہم افسوسناک طور پر لڑکی کا انتقال ہوگیا کیونکہ اسے اسقاط حمل کے عمل سے گزرنے کے بعد اسپتال لایا گیا تھا اور وہ جنسی زیادتی کی وجہ سے مزید تکلیف نہیں سہہ پائی تھی۔

لڑکی کی ساس نے پولیس کو بیان ریکارڈ کراتے ہوئے  الزام عائد کیا ہےکہ اس کی بہو کے ساتھ آئسولیشن وارڈ میں زیادتی کی گئی ہے کیونکہ وہ اسپتال سے باہر آنے کے بعد صدمے کی حالت میں تھی اور اپنی آخری سانسوں میں اس نے بتایا تھا کہ مجھے ایک ڈاکٹر نے زیادتی کا نشانہ بنایا ہے۔

پولیس نے مذکورہ واقعے کے بعد اسپتال کی سی سی ٹی وی فوٹیج قبضہ میں لے لی جس کی مدد سے دو ڈاکٹروں کو گرفتار بھی کیا گیا ہے، ملزمان سے مزید تفتیش کی جا رہی ہے۔

Comments

یہ بھی پڑھیں