The news is by your side.

Advertisement

پیٹ سے جڑے نوزائیدہ بچوں کو ڈاکٹرز نے کامیاب سرجری میں علیحدہ کر دیا

کراچی: شہر قائد کے نجی اسپتال میں ڈاکٹرز نے ایک آپریشن میں کامیابی کے ساتھ پیٹ سے جڑے نوزائیدہ بچوں کو علیحدہ کر دیا۔

تفصیلات کے مطابق کراچی کے نجی اسپتال میں جڑواں بچوں کو علیحدہ کرنے کا آپریشن کامیاب رہا، ڈاکٹرز نے 9 ماہ کے جڑواں بچوں کو جدا کر لیا، ڈاکٹرز کا کہنا ہے کہ دونوں بچے کامیاب سرجری کے بعد صحت مند ہیں۔

ڈاکٹرز کے مطابق بچوں کے پیٹ اور اندرونی غدود، اور جگر کا کچھ حصہ آپس میں جڑا ہوا تھا۔

اے آر وائی نیوز کے مطابق اسرار احمد نامی شہری اور ان کی زوجہ کے ہاں ایسے جڑواں بچوں کی پیدائش ہوئی تھی جن کے دھڑ آپس میں جڑے ہوئے تھے، ان بچوں محمد ایان اور محمد امان کو اسپتال ایک دوسرے سے پیوستہ حالت میں لایا گیا تھا۔

12 دسمبر 2020 کو آغا خان یونی ورسٹی اسپتال میں ان کو ایک دوسرے سے علیحدہ کرنے کی کامیاب سرجری کے بعد اب صحت مند بچوں کی طرح رہ رہے ہیں۔

ڈاکٹرز نے بتایا کہ ایان اور امان کا تعلق ایک دوسرے سے پیوستہ جڑواں بچوں کی قسم اومفالوپیگس (Omphalopagus) سے تھا، اس میں دونوں بچوں کے اجسام پیٹ سے جڑے ہوتے ہیں، کچھ اندرونی غدود ان میں شامل ہوتے ہیں، بشمول جگر اور بعض اوقات آنتیں بھی جڑی ہوتی ہیں، مذکورہ کیس میں جڑواں بھائیوں میں جگر کا بھی کچھ حصّہ جڑا ہوا تھا۔

بچوں کے والد اسرار احمد کا کہنا تھا کہ ان کے لیے یہ ایک بہت ہی چیلنجنگ سفر تھا، اسپتال آنے سے پہلے میں نے ایک خواب دیکھا تھا کہ ایان اور امان ایک دوسرے سے علیحدہ ہیں۔

ڈاکٹرز کے مطابق ایک دوسرے سے پیوستہ جڑواں بچوں کا پیدا ہونا شاذ و نادر ہی ہونے والی ایک پیدائشی بے قاعدگی ہے جس میں ڈھائی لاکھ پیدائشوں میں سے کوئی ایک واقعہ پیش آتا ہے۔

اس آپریشن کو سر انجام دینے والوں میں پیڈیاٹرک سرجری، انستھیزیالوجی، ریڈیالوجی، گیسٹرو انٹیسٹائنل سرجری اور نیورو سرجری کے شعبہ جات کے ڈاکٹرز، نرسیں اور ٹیکنیشئنز شامل تھے۔

پیڈیا ٹرک سرجن ڈاکٹر ظفر نذیر نے بتایا کہ اس 8 گھنٹے طویل سرجری میں 50 سے زائد کلینکل اور انتظامی عملے نے خدمات انجام دیں، سرجری سے قبل بچوں کی حالت کو درست طور پر سمجھنے کے لیے جدید امیجنگ اور سہ ابعادی پروٹوٹائپنگ استعمال کی گئی تھی۔

Comments

یہ بھی پڑھیں