site
stats
انٹرٹینمںٹ

لال مسجد پر بنائی جانے والی فلم پر پابندی

فلم مالک کے بعد وفاقی حکومت نے لال مسجد پر بنائی جانے والی ڈاکومنٹری فلم پر بھی پابندی عائد کردی ہے۔ فلم کو محمد علی نقوی نے ڈائریکٹ کیا ہے۔

ڈاکومنٹری ’امنگ دی بلیورز‘ میں لال مسجد کے اندر دی جانے والی تعلیمی صورتحال دکھائی گئی ہے۔ اس میں ان لوگوں کے بارے میں بھی بتایا گیا ہے جنہوں نے شدت پسند نظریے کے خلاف آواز اٹھائی۔

سنسر بورڈ کے نوٹیفیکشن کے مطابق ایسے وقت میں جب ملک میں دہشت گردی کے خلاف آپریشن جاری ہے، فلم دنیا بھر میں پاکستان کا غلط تشخص پیش کرے گی۔

فلم کے ڈائریکٹر محمد علی نقوی نے بتایا کہ فلم بنانے میں انہیں 6 سال کا عرصہ لگا۔ فلم لال مسجد میں تعلیم حاصل کرنے والے 2 طلبا کے گرد گھومتی ہے جن کے ذریعے بتایا گیا ہے کہ نظریاتی طور پر ہم کس قدر تقسیم ہیں۔

محمد علی نقوی کے مطابق فلم کو اسلام آباد میں 29 اپریل کو ہونے والے ایک فیسٹیول میں پیش کیا جانا تھا جس کے منتظمین نے پہلے حکام سے اجازت طلب کی۔ حکام نے اجازت دینے سے منع کردیا اور کہا کہ فلم پر ملک بھر میں پابندی عائد کی جاچکی ہے۔

فلم اس سے قبل 20 ممالک میں پیش کی جا چکی ہے اور 12 مختلف ایوارڈز بھی جیت چکی ہے۔

Print Friendly, PDF & Email
20

Comments

comments

اس ویب سائیٹ پر موجود تمام تحریری مواد کے جملہ حقوق@2018 اے آروائی نیوز کے نام محفوظ ہیں

To Top