امریکی ایئرپورٹ پر متعدد پناہ گزین آتے ہی زیرحراست -
The news is by your side.

Advertisement

امریکی ایئرپورٹ پر متعدد پناہ گزین آتے ہی زیرحراست

نیو یارک : نومنتخب امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ کے دستخط کرتے ہی انتظامیہ نے پُھرتی کا مظاہرہ کرتے ہوئے ایئر پورٹ پر ہی متعدد پناہ گزینوں کو حراست میں لے لیا، انسانی حقوق کی تنظیموں نے نیویارک کی عدالت میں ان پناہ گزینوں کو رہا کرنے کے لیے مقدمہ دائر کیا ہے جنہیں جان ایف کینیڈی ایئر پورٹ پر حراست میں رکھا گیا ہے۔

برطانوی نشریاتی ادارے بی بی سی کے مطابق امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ کے حکم پر چھ مسلمان ممالک کے باشندوں کا امریکہ میں 90 دن تک داخلہ بند ہے۔

اس حکم نامے پر عملدرآمد کا طریقۂ کار تاحال واضح نہیں ہے۔ امریکی اسٹیٹ ڈپارٹمنٹ نے بی بی سی کو بتایا کہ وہ اس پابندی کے فوری نفاذ کے لیے کام کر رہے ہیں۔

نیویارک میں دو عراقی پناہ گزینوں کو حراست میں لیا گیا ہے جن میں سے ایک امریکی فوج کے ساتھ مترجم کے طور پر کام کرتا تھا۔ یہ لوگ جمعے کو ہوائی اڈے کے ٹرانسٹ حصے میں تھے جس وقت اس حکم نامے پر دستخط کیے گئے اور انہیں وہیں روک دیا گیا۔

دوسری جانب امریکی صدر ٹرمپ نے اپنے بیان میں کہا تھا کہ ان اقدامات کا مقصد شدت پسند اسلامی دہشت گردی کو امریکہ سے باہر رکھنا ہے۔ لیکن اس حوالے سے انسانی حقوق کی تنظیموں کا کہنا ہے کہ شامی پناہ گزینوں اور دہشت گردی کا کوئی تعلق نہیں ہے۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں