The news is by your side.

Advertisement

انتخابات شفاف قرار کیوں دیئے ؟ ٹرمپ نے سائبر سکیورٹی عہدیدار کو برطرف کردیا

واشنگٹن : امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ نے گزشتہ صدارتی انتخابات کو شفاف قرار دینے کی پاداش میں ڈائریکٹر سی آئی ایس اے کرسٹوفر کربس کو عہدے سے برطرف کردیا۔

کرس کریبس نے گزشتہ ہفتے سرکاری اور نجی انتخابی افسران سے گفتگو میں کہا تھا کہ اس بات کا کوئی ثبوت نہیں ہے کہ ووٹنگ کے دوران کسی بھی طرح ووٹ کو ضائع یا تبدیل کیا گیا ہے یا کسی بھی طرح سے دھاندلی کی گئی ہے۔

امریکی صدر ڈونالڈ ٹرمپ سائیبر سکیورٹی اینڈ انفراسٹرکچر سکیورٹی ایجنسی (سی آئی ایس اے) کے ڈائریکٹر کرس کریبس کی اس بات سے سخت ناراض ہوئے اور انہیں عہدے سے معزول کردیا۔

سماجی رابطے کی ویب سائٹ ٹوئٹر پر ڈونلڈ ٹرمپ نے مذکورہ عہدیدار کے بیان کو جھوٹ قرار دیتے ہوئے کہا کہ صدارتی الیکشن کی سیکیورٹی کے سلسلے میں دیا گیا کرس کریبس کا حالیہ بیان بے حد غلط ہے۔

امریکی صدر نے کہا کہ الیکشن کے دوران مردہ افراد کی جانب سے ووٹ کرنا، پول واچرس کو پولنگ بوتھ میں جانے کی اجازت نہ دینا، ووٹنگ مشینوں میں گڑبڑ جن کے ذریعے ٹرمپ ٹو بائیڈن کی شکل میں ووٹوں کو تبدیل کیا گیا۔

اس کے علاوہ لیٹ ووٹنگ اور کئی طرح کی دھاندلی کی گئی تھی، لہٰذا فوری طور پر کریس کریبس کی سی آئی ایس اے ڈائریکٹر کی سروس ختم کر دی گئی ہے۔

صدارتی الیکشن کو امریکی تاریخ کے شفاف ترین انتخابات قرار دینے والے افسر کرسٹوفر کربز کا معطلی کے بعد امریکی ٹی وی سے بات کرتے ہوئے کہنا تھا کہ مجھے فخر ہے کہ میں نے اور میری ٹیم نے سی آئی اے ایس کے لیے کام کیا، ہم نے بہترین کام کیا۔

Comments

یہ بھی پڑھیں