The news is by your side.

Advertisement

سیلفی کے رجحان کی حوصلہ شکنی کرتی انوکھی سیاحت

آج کل سیلفی کھینچنا ایک عمومی عمل بن چکا ہے۔ آپ کہیں بھی جائیں، کچھ بھی کھائیں، سیلفی ایک لازمی جزو ہے۔

ماہرین کے مطابق ہر وقت سیلفی کھینچنا اور انہیں سوشل میڈیا پر پوسٹ کرنا ایک ایسا عمل ہے جو بالآخر آپ کو دماغی طور پر بیمار کرسکتا ہے۔ معروف اداکار جارج کلونی نے ایک بار کہا، ’آج کے دور میں ہمیں خوبصورت لمحوں کو جینے سے زیادہ انہیں محفوظ کرنے کی فکر ہے‘۔

آپ کی زندگی میں آنے والا ایک خوبصورت اور خوشی کا لمحہ بغیر لطف اندوز ہوئے گزارنا اور اسے بعد کے لیے ’محفوظ‘ کرلینا کہاں کی عقلمندی ہے۔ بعد میں آپ جتنی بار بھی اس لمحے کو دیکھیں آپ کو وہ خوشی حاصل نہیں ہوسکتی جو اس لمحے میں حاصل کی جاسکتی تھی۔

مزید پڑھیں: دنیا کی سب سے پہلی سیلفی

اسی خیال کو اجاگر کرنے کے لیے ایک سیاح نے کچھ انوکھے انداز میں سیاحت کی۔ اس نے مختلف جگہوں کا دورہ کیا اور وہاں اپنی تصاویر کھینچنے کے بجائے کاغذ سے بنائے ہوئے دو ڈوڈلز کی تصاویر کھینچیں۔

ان ڈوڈلز کا نام اس نے ابنگ اور نینگ رکھا اور ان کی مختلف مقامات پر مختلف لمحات کی تصویر کشی کی۔ ان ڈوڈلز نے اپنی سیلفیز ہرگز نہیں کھینچیں بلکہ تصاویر میں وہ مختلف لمحات سے لطف اندوز ہوتے دکھائی دے رہے ہیں۔

آپ بھی ان تصاویر سے لطف اندوز ہوں۔

1

2

3

4

5

6

8

9

10

11

12

18

13

14

15

16

17

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں