ڈاکٹر امجد نے آل پارٹی مسلم لیگ کی چیئرمین شپ چھوڑ دی
The news is by your side.

Advertisement

ڈاکٹر امجد نے آل پاکستان مسلم لیگ کی چیئرمین شپ چھوڑ دی

کراچی: آل پاکستان مسلم لیگ کے سربراہ ڈاکٹر امجد نے پارٹی چیئرمین شپ سے مستعفیٰ ہونے کا اعلان کردیا۔

ذرائع کے مطابق ڈاکٹر امجد نے اپنا استعفیٰ کورکمیٹی کو پیش کیا جسے منظور کرلیا گیا اور اے پی ایم ایل کے تنظیمی معاملات چلانے کے لیے ہدایت علی خیشگی کو عبوری چیئرمین مقرر کردیا گیا۔

اے پی ایم ایل ذرائع کا کہنا ہے کہ ڈاکٹر امجد مستعفیٰ ہونے کے بعد پارٹی سے علیحدہ نہیں ہوں گے بلکہ وہ سابق صدر جنرل (ر) پرویز مشرف کے قانونی امور کی نگرانی کریں گے۔

واضح رہے کہ اے پی ایم ایل کے سربراہ پرویز مشرف نے گزشتہ دو ماہ قبل (22 جون) کو پارٹی صدارت چھوڑنے کا اعلان کیا تھا، یہ اقدام انہوں نے الیکشن کمیشن آف پاکستان کی جانب سے کیے جانے والے فیصلے پر کیا تھا۔

الیکشن کمیشن آف پاکسستان نے سپریم کورٹ آف پاکستان کی جانب سے نااہل قرار دیے جانے کے بعد الیکشن کمیشن نے پرویز مشرف کا نام پارٹی صدارت سے ہٹانے کا فیصلہ کیا تھا۔

عام انتخابات میں بھرپور طریقے سے حصہ لینے کے لیے پرویزمشرف کی نااہلی پارٹی رجسٹریشن کی راہ میں رکاوٹ تھی، عدالتی فیصلہ الیکشن وقت سے بہت قریب آیا تو سابق صدر کو سربراہی سے مجبوراً مستعفیٰ ہونا پڑا تھا۔

یاد رہے کہ سپریم کورٹ نے غداری کیس میں عدم حاضری پر پرویز مشرف کو مہلت دیتے ہوئے کہا تھا کہ اگر سابق صدر عدالت میں پیش ہوجائیں تو انہیں عدالت تحفظ دے گی اور گرفتار نہیں کیا جائے گا ساتھ ہی الیکشن کمیشن میں اُن کی نامزدگی کے کاغذات وصول کر لیے جائیں گے۔

جسٹس ثاقب نثار نے ریمارکس دیتے ہوئے کہا تھا کہ ’مشرف کمانڈو ہیں تو پاکستان آکر دکھائیں اور سیاستدانوں کی طرح میں آرہا ہوں کی گردان مت کریں، مشرف نہ آئے تو کاغذات کی جانچ پڑتال نہیں ہونے دیں گے‘۔

بعد ازاں سپریم کورٹ نے 14 جون کو عدم حاضری پر پرویز مشرف کے کاغذات نامزدگی جمع کرانے کا عبوری حکم واپس لیتے ہوئے سماعت غیر معینہ مدت تک کے لیے ملتوی کردی تھی۔

واضح رہے کہ پشاور ہائیکورٹ پرویز مشرف کو تاحیات نا اہل قرار دے چکی ہے اور اے پی ایم ایل کی رجسٹریشن کا کیس الیکشن کمیشن میں زیر سماعت تھا۔

خیال رہے کہ سپریم کورٹ میں انتخابی اصلاحات کیس کا فیصلہ سناتے ہوئے پولیٹیکل پارٹیز ایکٹ2017 کی شق203 میں ترمیم کو کالعدم قرار دیتے ہوئے فیصلہ جاری کیا تھا کہ نااہل شخص پارٹی کا سربراہ نہیں بن سکتا ۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں