The news is by your side.

Advertisement

چیئرمین سینیٹ کو مواخذہ میں بغیر چارج شیٹ نہیں ہٹایا جاسکتا، ڈاکٹر بابراعوان

اسلام آباد : تحریک انصاف کے رہنما ڈاکٹر بابراعوان نے کہا ہے کہ چیئرمین سینیٹ کو مواخذہ میں بغیر چارج شیٹ نہیں ہٹایا جاسکتا، اپوزیشن ایوان کو دھمکی سے نہیں چلاسکتی۔

یہ بات انہوں نے اسلام آباد میں میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے کہی۔ انہوں نے کہا کہ سینیٹ کا ریکوزیشن اجلاس صرف ہنگامی بنیادوں پر بلایا جاسکتا ہے۔

اپوزیشن اراکین نے جو قرارداد جمع کرائی ہے وہ تحریک مواخذہ نہیں، بابراعوان کا کہنا تھا کہ چیئرمین سینیٹ صادق سنجرانی کو مواخذہ میں بغیر چارج شیٹ نہیں ہٹایا جاسکتا، اس حوالے سے ریکوزیشن اجلاس سے متعلق رولز آف بزنس خاموش ہیں۔

انہوں نے مزید کہا کہ حکومت چاہے تو120دن اجلاس نہ بلائے تو بھی فرق نہیں پڑتا، ایسی روایات پہلی بھی ہوچکی ہیں۔

ایک سوال کے جواب میں ڈاکٹر بابر اعوان کا کہنا تھا کہ اپوزیشن کو آئین اور قانون کے تحت چلنا ہوگا۔ اپوزیشن ایوان کو محض دھمکیوں سے نہیں چلاسکتی، جو مرضی کرلو کسی کو این آراو نہیں ملے گا۔

مزید پڑھیں: اپوزیشن نے چیئرمین سینیٹ کو ہٹانے کیلیے مشترکہ قرارداد جمع کرادی

واضح رہے کہ دو روز قبل اپوزیشن سینیٹرز نے چیئرمین سینیٹ صادق سنجرانی کو ہٹانے کے لیے مشترکہ قرارداد سینیٹ سیکرٹریٹ میں جمع کرادی ہے۔

قرارداد پر اڑتیس ارکان کے دستخط موجود ہیں، اپوزیشن کی جانب سے سینیٹ اجلاس کے لیے ریکوزیشن بھی جمع کرائی گئی، رولز کے مطابق ریکوزیشن پر سات دن میں سینیٹ اجلاس طلب کیاجاتاہے۔

مزید پڑھیں: چیئرمین سینیٹ نے استعفیٰ نہ دینے کا فیصلہ کر لیا

یاد رہے کہ اپوزیشن کی جانب سے چیئرمین سینیٹ سے استفعے کے مطالبے پر صادق سنجرانی نے اتحادی جماعتوں کی جانب سے حمایت کی یقین دہانی کے بعد مستعفی نہ ہونے کا فیصلہ کر لیا ہے۔ فاٹا کے آزاد اراکین کی جانب سے بھی چیئرمین سینیٹ کی حمایت کا اعلان کر دیا گیا ہے۔

 

Comments

یہ بھی پڑھیں