The news is by your side.

Advertisement

ڈاکٹرعبدالصمد 4 روزہ ریمانڈ پرنیب کے حوالے

پشاور: احتساب عدالت نے ڈائریکٹرآرکیالوجی ڈاکٹرعبدالصمد کو 4 روزہ ریمانڈ پر نیب کے حوالے کردیا۔

تفصیلات کے مطابق ڈائریکٹرآرکیالوجی ڈاکٹرعبدالصمد کو 5 روزہ جسمانی ریمانڈ پرمکمل ہونے پر آج احتساب عدالت میں پیش کیا گیا۔

عدالت میں سماعت کے دوران نیب کے وکیل کی جانب سے ملزم کے 14 روزہ جسمانی ریمانڈ کی استدعا کی گئی۔

وکیل نیب نے دلائل دیتے ہوئے کہا کہ مزید تحقیقات کررہے ہیں 14 روزہ ریمانڈ منظور کیا جائے۔

بعدازاں احتساب عدالت نے ڈائریکٹرآرکیالوجی ڈاکٹرعبدالصمد کو 4 روزہ ریمانڈ پر نیب کے حوالے کردیا۔

احتساب عدالت نے گزشتہ پیشی پر ڈاکٹرعبدالصمد کو 5 روزہ ریمانڈ پرنیب کے حوالے کیا تھا۔

نیب کی جانب سے الزام عائد کیا گیا تھا کہ ڈاکٹر عبد الصمد نے اپنے اختیارات کا ناجائز فائدہ اٹھاتے ہوئے آرکیالوجیکل سائٹس پر غیر قانونی بھرتیاں کی ہیں۔

گرفتاری کے وقت ڈائریکٹر آرکیا لوجی اینڈ میوزم ڈاکٹر عبد الصمد نے کہا تھا کہ ’’اگر الزامات ثابت ہوجائیں تو مجھے دگنی سزا دی جائے، لیکن اگر میں بے قصور ثابت ہوجاؤں تو پھر نیب کے افسر کے خلاف کارروائی کی جائے‘‘۔

احتساب عدالت کے جج نے بھی ڈاکٹر عبد الصمد کوریمانڈ پر نیب کے حوالے کرتے ہوئے تنبیہہ کی تھی کہ آئندہ سماعت میں ریکارڈ پیش کریں ۔ جج نے نیب سے یہ بھی کہا تھا کہ استاد کا معاشرے میں ایک باعزت مقام ہے ، اس کا خیال رکھا کریں۔

وزیر اعظم عمران خان نے واقعے کا نوٹس لیتے ہوئے چیئرمین نیب کو مشورہ دیا تھا کہ’’انہیں اپنے ادارے میں سے اس شرمناک حرکت کے ذمہ دار عناصر کے خلاف کارروائی کرنی چاہئیے‘‘۔

وزیر اعظم کی جانب سے اس ٹویٹ کے بعد چیئر مین نیب جسٹس (ر) جاوید اقبال نے اس واقعے کا نوٹس لیتے ہوئے ڈی جی نیب پشاور کو ڈاکٹر عبد الصمد اور ان کے خلاف مرتب کردہ ریکارڈ کے ہمراہ اسلام آباد ہیڈ آفس طلب کیا تھا۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں