The news is by your side.

Advertisement

کرونا وائرس میں مبتلا ڈاکٹر کا موت سے قبل آخری پیغام سب کو رلا گیا

نئی دہلی: بھارت میں کرونا وائرس میں مبتلا ایک ڈاکٹر کا فیس بک پر دردناک پیغام آخری ثابت ہوا، ان کی موت کے بعد ان کی اس پوسٹ نے لوگوں کو رلا دیا۔

بھارتی میڈیا کے مطابق ممبئی سے تعلق رکھنے والی 51 سالہ سینئر میڈیکل افسر ڈاکٹر منیشا جدھاؤ کرونا وائرس میں مبتلا اور اسپتال میں زیر علاج تھیں۔

اتوار کی صبح سماجی رابطے کی ویب سائٹ فیس بک پر اپنی پوسٹ میں انہوں نے لکھا کہ ہوسکتا ہے کہ یہ میرا آخری گڈ مارننگ ہو۔ میں آپ کو اس پلیٹ فارم پر اب نہیں ملوں گی۔

انہوں نے لکھا کہ جسم مر جاتا ہے لیکن روح نہیں مرتی، روح لافانی ہے۔

یہ الفاظ ڈاکٹر منیشا کے آخری الفاظ ثابت ہوئے، اس کے اگلے ہی دن کرونا وائرس کے سبب وہ دم توڑ گئیں۔

منیشا کی پوسٹ پڑھنے کے بعد ان کے دوستوں اور اہل خانہ نے انہیں حوصلہ دیا اور کہا کہ فکر نہ کرو، آپ جلد ہی واپس آئیں گی، ہم آپ کے ساتھ ہیں آپ کو کچھ نہیں ہوگا۔ لیکن ڈاکٹر منیشا جانبر نہ ہوسکیں۔

ڈاکٹر منیشا مہاراشٹر کے سرکاری اسپتال میں خدمات انجام دینے والی پہلی ڈاکٹر بن گئی ہیں جو کرونا وائرس کے باعث جان کی بازی ہار گئیں۔ انڈین میڈیکل ایسوسی ایشن کے مطابق مہاراشٹر میں اب تک 18 ہزار کے قریب ڈاکٹر کرونا وائرس کا شکار اور 168 ڈاکٹر اس سے ہلاک ہوئے ہیں۔

ڈاکٹر منیشا کی موت پر شہر کے میئر نے بھی افسوس کا اظہار کرتے ہوئے کرونا وائرس کی صورتحال کو خطرناک قرار دیا ہے۔

Comments

یہ بھی پڑھیں