The news is by your side.

Advertisement

پلازمہ لگانے کے کتنے دن بعد کرونا کے مریض کی حالت بہتر ہوتی ہے؟

اسلام آباد : این آئی بی ڈی میں بلڈ ڈزیز کے اسپیشلٹ ڈاکٹرطاہرشمسی کا کہنا ہے کہ ڈریپ کی جانب سے اجازت نامے ملنے کےبعد پلازمہ ٹیکنیک پر کام شروع ہوگا،پلازمہ لگانے کے بعد 4سے5دن میں کرونا کے مریض کی طبیعت بہتر ہوجاتی ہے۔

تفصیلات کے مطابق ڈریپ کی جانب سے کرونا کے علاج کیلئے کلینکل ٹرائل کی اجازت کے بعد این آئی بی ڈی میں بلڈ ڈزیز کے اسپیشلٹ ڈاکٹرطاہرشمسی نے کہا کہ ڈریپ سے ابھی تک کوئی تحریری خط نہیں آیا ہے ، ہینڈسینی ٹائزر بنانے کا کام اب انشااللہ شروع ہوجائے گا۔

ڈاکٹرطاہرشمسی کا کہنا تھا کہ ڈریپ کی جانب سے اجازت نامے ملنے کےبعد کام شروع ہوگا، کوروناٹیسٹ منفی ہونے کے2ہفتے بعد صحت مند افراد کا پلازمہ لیاجاسکےگا، میری اطلاع کے مطابق 4سے7افراد پلازمہ دینے کیلئے تیار ہیں۔

ماہر ڈاکٹر نے کہا کہ پلازمہ نکالنے کاعمل صرف تصدیق شدہ میڈیکل ادارے کرسکتے ہیں اور پلازمہ صرف منظور شدہ آئسولیشن یونٹ کے مریضوں کو دیا جاسکےگا، پوری کوشش ہوگی کہ پلازمہ کے ذریعے لوگوں کی جانیں بچاسکیں۔

ان کا کہنا تھا کہ پلازمہ لگانے کے48گھنٹےکےاندر مریضوں کی حالت بہتر ہونا شروع ہوتی ہے، پلازمہ لگانے کے 4سے5دن میں طبیعت بہتر ہوجائے گی۔

ڈاکٹرطاہرشمسی نے کہا کہ دنیا کے دیگر ممالک میں بھی پلازمہ لگائے جارہےہیں، مشین کےذریعے صرف پلازمہ نکال کر خون دوبارہ جسم میں جاتارہےگا، پلازمہ لینے سے پہلےضروری ہے صحت مند افرادکو کوئی اور بیماری نہ ہو۔

این آئی بی ڈی میں بلڈ ڈزیز کے اسپیشلٹ کا مزید کہنا تھا کہ پلازمہ نکالنے کا عمل مکمل محفوظ ہے اس میں کوئی پیچیدگی نہیں ہوتی.

یاد رہے ڈرگ ریگولیٹری اتھارٹی آف پاکستان نے کوروناعلاج کےلیےپلازماتھراپی کے کلینکل ٹرائل اور مقامی طورپرتیاروینٹی لیٹرز کے کلینیکل ٹرائل کی اجازت دے دی۔

خیال رہے ڈاکٹر طاہر شمسی نے اپنے بیان میں کہاتھا کہ سندھ حکومت نے پلازمہ ٹیکنیک سےعلاج کی اجازت دے دی ہے ، پلازمہ ٹیکنیک سے کورونا مریضوں کا علاج چاروں صوبوں میں ہوگا، پلازمہ ٹیکنیک سے کورونا مریضوں کو آئی سی یو، وینٹی لیٹر کی ضرورت نہیں ہوگی۔

واضح رہے پاکستان میں کورونا سے صحتیاب پہلے نوجوان یحییٰ جعفری اپنا پلازمہ عطیہ کرچکا ہے۔

fb-share-icon0
Tweet 20

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں