The news is by your side.

Advertisement

بھارتی ڈاکٹر عظمیٰ کی ڈپلیکیٹ سفری دستاویزات کی استدعا

اسلام آباد: بھارتی شہری ڈاکٹر عظمیٰ نے ڈپلیکیٹ سفری دستاویز کے حصول کے لیے اسلام آباد ہائیکورٹ سے استدعا کر دی۔ خاتون کے شوہر طاہر علی نے عظمیٰ سے آزاد ماحول میں ملاقات کی درخواست کردی۔

تفصیلات کے مطابق بھارتی شہری ڈاکٹر عظمیٰ کی جانب سے شوہر کے خلاف دائر درخواست پر ان کے وکیل نے اسلام آباد ہائیکورٹ کو مؤقف پیش کر دیا۔

جسٹس محسن اختر کیانی کی سربراہی میں ہونے والی سماعت میں وکیل نے مؤقف اختیار کیا کہ طاہر علی کی عظمیٰ کے ساتھ شادی کو نہیں مانتے۔

ڈاکٹر عظمیٰ کے وکیل نے عدالت سے انہیں ڈپلیکیٹ سفری دستاویزات جاری کرنے کی استدعا بھی کی۔

پاکستانی شہری طاہر علی کے وکیل نے عدالت کو بتایا کہ بھارتی ہائی کمیشن نے عظمیٰ سے ملاقات کا وقت دیا لیکن ملنےنہیں دیا۔ 3 مئی کو بونیر میں ہونے والے نکاح کے گواہ طاہر کے والد اور کزن تھے۔

وکیل کا کہنا تھا کہ نکاح خواں کے مطابق بھارتی شہری عظمیٰ بھی شادی پر رضا مند تھی۔ عدالت طاہر کو عظمیٰ سے آزاد ماحول میں ملاقات کا حکم دے۔

عدالت نے سیکریٹری داخلہ اور بھارتی کمیشن کو نوٹس جاری کرتے ہوئے 22 مئی تک جواب طلب کرلیا۔ بھارتی ہائی کمیشن کے سیکریٹری پیش سنگھ بھی عدالت میں موجود تھے۔

یاد رہے کہ ڈاکٹر عظمیٰ اور صوبہ خیبر پختونخواہ کے شہر بونیر کے رہائشی طاہر علی کی دوستی ملائیشیا میں ہوئی تھی جو محبت میں بدل گئی۔ کچھ عرصہ بعد ڈاکٹر عظمیٰ، طاہر سے شادی کرنے کے لیے واہگہ بارڈر سے پاکستان پہنچیں جس کے بعد دونوں کا نکاح انجام پایا۔

مزید پڑھیں: پاکستانی شہری نے گن پوائنٹ پر نکاح کیا: بھارتی خاتون کا الزام

دو روز بعد ڈاکٹر عظمیٰ طاہر کے بھارتی ویزے کی درخواست لیے 2 روز بھارتی ہائی کمیشن گئیں جہاں سے وہ منظر سے غائب ہوگئیں۔

تاہم اگلے ہی دن وہ منظر عام پر آگئیں اور انہوں نے اپنا بیان بدلتے ہوئے کہا کہ ان سے گن پوائنٹ پر نکاح کروایا گیا۔

مقامی عدالت میں درخواست دائر کرنے کے بعد انہوں نے مبینہ شوہر پر گن پوانئٹ پر نکاح کے ساتھ ساتھ زیادتی اور تشدد کا الزام بھی لگا دیا۔ ان کا کہنا ہے کہ طاہر نشہ آور ادویات دے کر واہگہ بارڈر سے پاکستان لایا۔

ان کے مطابق وہ بہت مشکل سے ہائی کمیشن پہنچی ہیں اور یہاں پہنچ کر انہوں نے پناہ لے لی، اب وہ دہلی جانے تک یہیں رہیں گی۔

بعد ازاں ان دونوں کے نکاح کی ویڈیو بھی منظر عام پر آگئی جس میں ڈاکٹر عظمیٰ کو بخوشی اور پورے ہوش و حواس کے ساتھ نکاح کے لیے ہامی بھرتے دیکھا جاسکتا ہے۔

مزید پڑھیں: بھارتی ڈاکٹر عظمیٰ کے نکاح کی ویڈیو سامنے آگئی

دوسری جانب ڈاکٹر عظمیٰ کے شوہر طاہر علی مؤقف ہے کہ عظمیٰ نے اپنی مرضی سے شادی کی اور وہ اب جھوٹ بول رہی ہے۔

طاہر علی نے بھی اسلام آباد ہائیکورٹ سے رجوع کرلیا ہے اور اپنی درخواست میں موقف اپنایا کہ ڈاکٹر عظمیٰ نے دباؤ میں آ کر مجھ پر جھوٹے الزامات عائد کیے ہیں۔ درخواست پر فیصلے تک ڈاکٹر عظمیٰ کو بیرون ملک جانے سے روکا جائے۔

ادھر  دفتر خارجہ کا کہنا ہے کہ ڈاکٹر عظمیٰ کے معاملے پر بھارتی ہائی کمیشن سے رابطے میں ہیں۔ اس معاملے پر قانونی مراحل طے کیے جائیں گے۔

ترجمان کے مطابق قانون کارروائی مکمل ہونے کے بعد ڈاکٹر عظمیٰ کو ان کے وطن واپس روانہ کردیا جائے گا۔


اگر آپ کو یہ خبر پسند نہیں آئی تو برائے مہربانی نیچے کمنٹس میں اپنی رائے کا اظہار کریں اور اگر آپ کو یہ مضمون پسند آیا ہے تو اسے اپنی فیس بک وال پر شیئر کریں۔

Print Friendly, PDF & Email

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں