The news is by your side.

Advertisement

کشمیر کی حمایت پر پابندیاں ختم : ڈاکٹر ذاکر نائیک نے مودی کی پیشکش ٹھکرا دی

نئی دہلی : بھارت کے معروف مذہبی اسکالر ڈاکٹر ذاکر نائیک نے مودی حکومت کی قلعی کھول دی، انہوں نے انکشاف کیا کہ کشمیر مقبوضہ کشمیر کی خصوصی حیثیت کے خاتمے کی حمایت پر تمام پابندیاں ہٹانے کلی پیشکش کی گئی۔

یہ بات انہوں نے اپنے ایک ویڈیو پیغام میں بتائی۔ ڈاکٹر ذاکر نائیک نے دعویٰ کیا کہ مودی حکومت نے ان سے ڈیل کرنے کی کوشش کی ہے،۔

مودی حکومت نے ستمبر دوہزار انیس میں ایک وفد کے ذریعے ان سے رابطہ کیا تھا، اس وفد میں بھارتی صحافی کی بھی موجود تھے، وفد نے بتایا کہ وہ وزیراعظم مودی کی خصوصی ہدایت پر ان سے ملنے آئے ہیں۔

ڈاکٹر ذاکر نائیک نے ویڈیو پیغام میں کہا کہ اس وفد نے مجھے پیشکش کہ اگر مقبوضہ کشمیر کی خصوصی حیثیت کے خاتمے کے حوالے سے مودی سرکار کی حمایت کردیں تو بدلے میں میرے خلاف کی جانے والی تمام الزامات اور کارروائیاں روک کر بھارت واپسی کی راہ ہموار کردی جائے گی۔

 ڈاکٹر ذاکر نائیک کے مطابق وفد کا کہنا تھا کہ بھارتی حکام نے یہ بھی کہا ہے کہ وہ حکومت اور ذاکر نائیک کے درمیان موجود تمام غلط فہمیوں کو بھی ختم کرنا چاہتے ہیں۔

اس طرح وہ اس حکومت اور مسلمان اقلیت کے درمیان موجود تناؤ کوختم کرنے میں مدد ملے گی، ذاکر نائیک کے مطابق انہوں نے حکومتی پیشکش کو فوری طور پر مسترد کردیا۔

مزید پڑھیں : بھارتی عدالت کا نامورمذہبی اسکالرڈاکٹر ذاکر نائیک کی جائیداد ضبط کرنے حکم

واضح رہے کہ بھارتی عدالت نے معروف اسکالر ڈاکٹر ذاکر نائیک کی جائیدادیں ضبط کرنے کا حکم دے دیا ہے، ذاکر نائیک کی این جی او پر غیر قانونی سرگرمیوں میں ملوث ہونے کا الزام ہے۔

بھارتی میڈیا کے مطابق بھارت کی عدالت کے فیصلے میں کہا گیا کہ ذاکر نائیک کے ممبئی میں چار فلیٹ اورایک دکان کو ضبط کیا جائے۔
خیال رہے بھارت میں ذاکر نائیک اور ساتھیوں سے100کروڑ کی سرمایہ کاری کی تحقیقات کی جارہی ہے۔

fb-share-icon0
Tweet 20

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں