The news is by your side.

Advertisement

کورونا کی جعلی اور اسمگلڈ ادویات بیچنے والوں کے خلاف گرینڈ ایکشن کا فیصلہ

اسلام آباد : ڈریپ (ڈرگ ریگولیٹری اتھارٹی) نے کورونا کی جعلی اور اسمگلڈ ادویات بیچنے والوں کے خلاف گرینڈ ایکشن کا فیصلہ کرتے ہوئے ملک میں میڈیسن مارکیٹس کی سخت سرویلنس کی ہدایت کردی۔

تفصیلات کے مطابق ڈریپ (ڈرگ ریگولیٹری اتھارٹی) نے کورونا کی جعلی اور اسمگلڈ ادویات بیچنے والوں کے خلاف گرینڈ ایکشن کا فیصلہ کرلیا ، اس حوالے سے سی ای او ڈریپ ڈاکٹر عاصم روف کی ہدایت پر صوبائی دفاتر کو مراسلہ ارسال کردیا گیا ہے۔

مراسلے میں سی ای او ڈریپ نے ملک میں میڈیسن مارکیٹس کی سخت سرویلنس کی ہدایت کردی ہے اور کہا گیا ہے کہ دنیا بھر کو کورونا ادویات کی قلت کا سامنا ہے، مفاد پرست عناصر کورونا ادویات کی قلت کا فائدہ اٹھا رہے ہیں۔

ڈریپ کا کہنا ہے کہ بعض عناصر جعلی اور اسمگلڈ کورونا ادویات فروخت کر رہے ہیں، ڈریپ کی جانب سے سماج دشمن عناصر کے خلاف کاروائیاں جاری ہیں، کاروائیوں میں جعلی، سمگلڈ کورونا ادویات بیچنے والے متعدد افراد پکڑے جا چکے ہیں۔

مراسلے میں کہا گیا ہے کہ جعلی اور اسمگلڈ ادویات بیچنے والوں کے خلاف سخت کارروائیاں ناگزیر ہیں، ایسی کورونا ادویات بیچنے والوں کے خلاف کارروائیاں تیز کی جائیں، صوبائی حکام ملکی ادویات مارکیٹ کی نگرانی مزید سخت کریں۔

ڈریپ کے مطابق سرویلنس سے جعلی اور اسمگلڈ ادویات کا دھندہ کرنے والوں پتہ چلایا جائے اور اسمگل شدہ کورونا ادویات بیچنے والوں کے خلاف سخت کارروائی کی جائے جبکہ صوبائی دفاتر سماج دشمن عناصر کے خلاف کارروائیوں سے صدر دفتر کو آگاہ کریں۔

سی ای او ڈریپ ڈاکٹر عاصم روف کا کہنا تھا کہ جعلی اور اسمگلڈ ادویات کی فروخت ناقابل معافی جرم ہے، ایسی ادویات بیچنے والوں سے کوئی رعایت نہ برتی جائے گی، عوام کیلئے عالمی معیار کی ادویات کی دستیابی اولین ترجیح ہے۔

Comments

یہ بھی پڑھیں