site
stats
صحت

خبردار! ناشتے میں جوس پینا نظام ہاضمہ کی خرابی کا باعث بن سکتا ہے

خالی پیٹ جوس پینے سے مفید بیکٹریا کی کارکردگی متاثر ہوتی ہے

اگر آپ ناشتے میں جوس پینے کے عادی ہیں تو فوری طور پر اس عادت کو ترک کردیں بہ صورت دیگر کئی امراض کا سامنا ہو سکتا ہے اور جو بالخصوص نظام ہاضمہ میں بگاڑ کا باعث بن سکتی ہے۔

رات کے کھانے کے بعد بھرپور نیند لینے تک آپ کا معدہ دس سے بارہ گھنٹے تک خالی رہتا ہے ایسی حالت میں اگر خالی معدے میں جوس پی لیا جائے تو نظام ہاضمہ پر مضر اثرات مرتب ہوتے ہیں۔

خالی پیٹ جوس پینے سے آپ کی صحت کو دو بڑے نقصانات کا احتمال رہتا ہے اول یہ معدے اور نظام ہاضمہ میں پائے جانے والے مفید بیکٹریا کی کارکردگی کو متاثر کرتا ہے اور دوئم جوس میں بڑی مقدار میں ’’ فرکٹوس‘‘ اور ’’ شوگر‘‘ موجود ہوتی ہے جسے ہضم کرنے میں خالی معدہ ناکام رہتا ہے۔

عشایئے کے بعد ناشتے تک پیٹ دس سے بارہ گھنٹے خالی رہتا ہے اور ایسے موقع پر جوس پی لیا جائے تو جوس میں موجود بھاری مقدار شوگر کو خالی معدہ ہضم نہیں کر پاتا اور وہ فوری طور پر چھوٹی آنت میں فرکٹوس کی شکل میں پہنچ جاتی ہے اور بگیر ہضم ہوئے خون میں شامل ہو جاتی ہے جو نقصان کا سبب بنتی ہے۔

ان حقائق کی روشنی میں ماہرین طب اور غذائیت کا کہنا ہے کہ ناشتے میں خالی پیٹ جوس پینا صحت کے لیے مضر ثابت ہو سکتا ہے اس لیے تجویز کیا جاتا ہے کہ لوگوں کو خالی پیٹ جوس پینے سے اجتناب برتنا چاہیے۔


خبر کے بارے میں اپنی رائے کا اظہار کمنٹس میں کریں‘مذکورہ معلومات کو زیادہ سے زیادہ لوگوں تک پہنچانے کےلیے سوشل میڈیا پرشیئر کریں۔

Print Friendly, PDF & Email
20

Comments

comments

loading...

Most Popular

اس ویب سائیٹ پر موجود تمام تحریری مواد کے جملہ حقوق@2018 اے آروائی نیوز کے نام محفوظ ہیں

To Top