The news is by your side.

Advertisement

دشمن کے ڈرون کو ناکارہ بنانے والا ‘ ڈرون’ تیار

معیاری فوٹیج کے لئے ڈرون کیمروں کا استعمال عام ہونے کے ساتھ ساتھ سیکیورٹی مسائل بھی پیدا کررہا ہے تاہم اسے بھی ہاتھ کرنے کے لئے ڈرون ایجاد کرلیا گیا ہے۔

یہ اہم ترین ایجاد یورپی ملک لتھوانیا کے ایک موجد کی کاوش ہے جو پہلے بھی اس طرح کی اشیا بناتے رہے ہیں، یہ ڈرون ایک ڈبے سے گولی کی طرح فائر ہوتا ہے اور اس کی اطراف میں لگی چاروں پنکھڑیاں کھل جاتی ہیں۔اسی دوران ڈرون ایک جالا پھینکتا ہے جو دشمن ڈرون کے ہاتھ پیر باندھ کر اسے نیچے گرادیتا ہے، اس جالے والے والے ڈرون کو ‘ڈرون انٹرسیپٹر’ کا نام دیا گیا ہے۔

ڈرون برق رفتاری سے نکلتا ہے اور سامنے موجود چھوٹے کواڈ کاپٹر کو اپنے جال میں پھنسالیتا ہے، اس کا کیمرہ مسلسل دشمن ڈرون کا بصری تعاقب کرتا رہتا ہے اور یوں تیزی سے اوپر اٹھ کر اپنی پنکھڑیاں کھول کر جال پھیلاتا ہے اور دوسرے ڈرون کے گرد گھیرا تنگ کرکے اسے نیچے پٹخ دیتا ہے۔

اس کے چاروں پنکھے جب کھلتے ہیں تو ان کے درمیان میں ہی مضبوط جال لگا ہوتا ہے، جالا ڈرون اپنا کام کرکے پیراشوٹ کھول کر نیچے اترجاتا ہے۔

یہ پیراشوٹ خودکار انداز میں کھلتا ہے تاکہ ڈرون محفوظ رہے اور بار بار استعمال کیا جاسکے، اس کے بعد چاروں پنکھڑیوں (پروپیلرز) بھی نیچے آگرتے ہیں اور انہیں جمع کرکے دوبارہ ڈرون پر لگایا جاسکتا ہے۔

Comments

یہ بھی پڑھیں