The news is by your side.

Advertisement

کراچی حیدری میں 2 لاکھ کی ڈکیتی کا ڈراپ سین، پرائیویٹ گارڈ ملوث نکلا

سڑک پر کچرا پھینکنے پر شہری گرفتار، مقدمہ درج

کراچی: ڈسٹرکٹ سینٹرل حیدری میں ڈکیتی کا ڈرامائی طور پر ڈراپ سین ہوا ہے، 2 لاکھ کی ڈکیتی میں پرائیویٹ گارڈ ملوث نکلا۔

تفصیلات کے مطابق 2 روز قبل کراچی کے علاقے حیدری میں دو لاکھ روپے کی ڈکیتی ہوئی تھی، معلوم ہوا تھا کہ نجی گارڈ سے ڈاکوؤں نے دو لاکھ روپے لوٹ کر اس کی ٹانگ پر گولی مار دی تھی۔

پولیس کی تفتیش کے بعد آج ایس ایس پی سینٹرل نے میڈیا کو بتایا کہ 2 روز پہلے مبینہ ڈکیتی کی واردات میں نجی سیکورٹی گارڈ شیر محمد خود ہی ماسٹر مائنڈ نکلا ہے۔

پولیس افسر عارف اسلم راؤ کے مطابق مبینہ ڈکیتی میں سیکورٹی گارڈ کی ٹانگ میں گولی لگی تھی، واردات میں 2 لاکھ روپے اور گارڈ کا اسلحہ بھی چھیننے کا بتایا گیا تھا۔

ملزم کو دکان مالک نے 2 لاکھ روپے بینک میں جمع کرانے کے لیے دیے، تاہم پیسے دیکھ کر ملزم نے مجرمانہ پلاننگ کی، خالی جگہ دیکھ کر خود پر گولی چلائی اور پستول بھی غائب کر دیا۔

یہ بھی پڑھیں:  کراچی پولیس کی کارروائی، جعلی صحافی اور سرکاری املاک چرانے والے گرفتار

پولیس کا کہنا ہے کہ تفتیش کے بعد اصل ملزم کو گرفتار کر کے اس کے قبضے سے 1 لاکھ 45 ہزار روپے بر آمد کر لیے گئے ہیں۔

واضح رہے آج کراچی سچل پولیس کی مختلف کارروائیوں میں 17 ملزمان گرفتار کر لیے گئے ہیں، ملزمان سے اسلحہ، گٹکا، فلیورڈ تمباکو، اور شیشہ بار کا دیگر سامان ضبط کر لیا گیا، پولیس کے مطابق ملزمان علاقے میں مختلف نوعیت کے جرائم میں ملوث تھے۔

ادھر عید گاہ پولیس نے دفعہ 144 کی خلاف ورزی پر ایک شہری کو گرفتار کر لیا ہے، گرفتار شہری کاٹھ کباڑ سڑک پر پھینک رہا تھا، ایس ایس پی سٹی مقدس حیدر نے بتایا کہ کچرا پھینکنے پر دفعہ 144 کے تحت پابندی عاید ہے، گرفتار ملزم کے خلاف مقدمہ درج کر لیا گیا ہے۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں