The news is by your side.

Advertisement

منشیات بحالی مرکز میں علاج کے نام پر غیر انسانی سلوک، 133 افراد بازیاب

لاہور: منشیات بحالی مرکز سے 133 افراد کو بازیاب کرا لیا گیا، جہاں ان کے ساتھ علاج کے نام پر غیر انسانی سلوک ہو رہا تھا۔

تفصیلات کے مطابق لاہور میں منشیات کے علاج و بحالی کے ایک غیر رجسٹرڈ مرکز گارڈین ہوم کو سیل کر دیا گیا، اس غیر قانونی مرکز میں 133 افراد کو یر غمال بنا کر رکھا گیا تھا۔

پنجاب ہیلتھ کیئر کمیشن کے ترجمان نے بتایا کہ منشیات بحالی کے مرکز سے 133 افراد کو بازیاب کرایا گیا ہے، جنھیں ان کے رشتے داروں کے حوالے کر دیا گیا۔

ترجمان پنجاب ہیلتھ کیئر کمیشن کے مطابق بازیاب افراد میں سے 20 مریضوں کو پنجاب انسٹیٹیوٹ آف مینٹل ہیلتھ منتقل کر دیا گیا ہے۔

پی ایچ سی کے مطابق غیر قانونی بحالی مرکز کے خلاف ضلعی انتظامیہ، محکمہ صحت، پولیس، اور دیگر متعلقہ محکموں نے مشترکہ طور پر کارروائی کی،۔

ترجمان نے بتایا کہ غیر رجسٹرڈ گارڈین ہوم میں مریضوں کے ساتھ غیر انسانی سلوک ہوتا تھا، مریضوں کو بغیر کسی علاج بدترین حالات میں رکھ کر تشدد کیا جاتا تھا۔

یہ بھی معلوم ہوا کہ بحالی کے نام پر قائم مرکز میں منشیات اور ذہنی امراض کے ماہرین اور طبی عملہ بھی تعینات نہیں تھا۔

واضح رہے کہ پنجاب ہیلتھ کیئر کمیشن نے عطایئوں کے خلاف کارروائیاں شروع کر رکھی ہیں، جس میں 122 عطائیوں کے اڈے سربمہر کر دیے گئے ہیں، پی ایچ سی کے ڈیٹا کے مطابق کریک ڈاؤن میں 1,355 علاج گاہوں پر چھاپے مارے گئے، جن میں سے 433 پر کاروبار تبدیل پائے گئے۔

Comments

یہ بھی پڑھیں