عراقی شہری نے لاکھوں ڈالرز کی انعامی رقم کینسر کے تحقیقاتی مرکز کو عطیہ کردی Dubai
The news is by your side.

Advertisement

عراقی شہری نے لاکھوں ڈالرز کی انعامی رقم کینسر کے تحقیقاتی مرکز کو عطیہ کردی

دبئی : عالمی ہوائی اڈے پر لاکھوں ڈالرز جیتنے والی عراقی شہری نے خطیر رقم کا آدھا حصّہ کینسر کے تحقیقاتی مرکز میں عطیہ کردیا۔

تفصیلات کے مطابق متحدہ عرب امارات میں ملازمت کرنے والے عراقی شہری نے دبئی انٹرنیشنل ایئر پورٹ کے ڈیوٹی فری لکی ڈرا سے دس لاکھ امریکی ڈالرز کی خطیر رقم جیتی تھی۔

مقامی میڈیا کا کہنا تھا کہ طالب گزشتہ 20 برس سے یروس نامی کمپنی میں ملازم ہیں اور ایچ آر مینجر کی حیثیت سے خدمات انجام دے رہے ہیں، جب انہیں لاٹری کے متعلق بتایا گیا تو یہ عراق جانے کےلیے ایئرپورٹ پر موجود تھے اور 45 منٹ بعد طالب کی فلائٹ تھی۔

اماراتی میڈیا کا کہنا ہے کہ طالب اپنی زمین فروخت کرنے کےلیے عراق جارہے تھے تاکہ اپنی بہن کا علاج کرواسکیں۔،

قسیم طالب کا کہنا ہے کہ میری بہن اور والدہ دونوں کینسر کے مہلک مرض میں مبتلا ہیں اور والد کی موت بھی معدے کے کینسر کے باعث ہوئی تھی، اس لیے میں نے آدھی انعامی رقم عراق میں کینسر کے تحقیقات مرکز کو عطیہ کردی جبکہ باقی رقم میں اپنے بچوں کی پڑھائی پر خرچ کروں گا۔

عراقی شہری کا کہنا تھا کہ تعلیم کی اہمیت بہت زیادہ ہے اور ہمارا تعلق ایک تعلیم یافتہ گھرانے سے ہے۔

اماراتی خبر رساں ادارے کا کہنا تھا کہ 44 سالہ عراقی شہری قسیم طالب گذشتہ کئی برسوں سے ملینیم ملینئر کمپنی کا لاٹری ٹکٹ خرید رہے تھے۔

مزید پڑھیں : عراقی شہری نے لاکھوں ڈالرز کی لاٹری جیت لی

خیال رہے کہ عراقی شہری قسیم طالب نے گذشتہ برس 21 دسمبر کو دبئی ڈیوٹی فری ملینیئم ملینئر سے دس لاکھ ڈالرز کی رقم جیتی تھی۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں