The news is by your side.

Advertisement

دبئی نے ایک اور بڑا اعزاز اپنے نام کرلیا، گنیز بک میں اندراج

دبئی : قدرتی گیس سے مالا مال دبئی میں قائم جبل علی کمپلیکس دنیا کا سب سے بڑا توانائی پیدا کرنے والا ادارہ بن گیا۔ بہترین کارکردگی کے باعث یہ ادارہ گنیز بک آف ورلڈ ریکارڈ میں اپنا نام درج کرانے میں کامیاب ہوگیا۔

غیر ملکی خبر رساں ادارے کے مطابق دبئی میں گیس کی پیداوار کی ایک ایسی بڑی سہولت موجود ہے جس نے اس کا نام ایک بار پھر گنیز ورلڈ ریکارڈر میں شامل کر دیا ہے۔

عرب نیوز نے ایمریٹس نیوز ایجنسی کا حوالہ دیتے ہوئے بتایا ہے کہ دبئی الیکٹرک اینڈ واٹر اتھارٹی کے جبل علی کمپلکس کو دنیا میں سب سے بڑے واحد قدرتی گیس سے توانائی پیدا کرنے کا مقام قرار دیا گیا ہے۔

دبئی الیکٹرک اینڈ واٹر اتھارٹی کے چیف ایکزیکٹیو سعید محمد کا کہنا ہے کہ ان کے ادارے نے بجلی کے باقائدہ نظام کے منصوبے تیار کیے ہیں جو2030 تک اس کے طلب کو مدِ نظر رکھ کر بنایا گیا ہے۔

اس کمپلیکس میں9547 میگا واٹ بجلی پیدا کرنے کی صلاحیت موجود ہے۔ یہ ادارہ 10 لاکھ سے زائد صارفین کو بجلی کی سہولت فراہم کرتا ہے۔

دبئی کی جنوب میں واقع اس پلانٹ میں2019 میں توسیع کی گئی تھی اور اب یہ دو ہزار885 میگاواٹ بجلی فراہم کر سکتا ہے۔

گنیز ورلڈ ریکارڈ میں دبئی کا نام ایک ایسے وقت سامنے آیا ہے جب دبئی الیکٹرک اتھارٹی اپنے آپریشنز میں بہتری لارہی ہے۔ اس میں ٹیکنالوجی کی شمولیت جیساکہ آرٹیفیشل انٹیلیجنس وغیرہ شامل ہے۔

سعید محمد نے بتایا کہ اس سے اتھارٹی کی پیداواری صلاحیت میں33.41 فیصد بہتری آئی ہے جس سے مالی بچت میں بھی بہت مدد ملی ہے۔

ان کا مزید کہنا تھا کہ اس بہتری سے6.4 کروڑ ٹن کاربن کا اخراج کم ہوا ہے جو کہ32 کروڑ سے زائد درخت لگانے کے برابر ہے۔

اس سے نائٹروجن آکسائیڈ گیسز میں46 ہزار ٹن اور سلفر ڈائی آکسائیڈ میں تین ہزار ٹن کی کمی آئی ہے۔ ان دونوں سے سانس لینے کا نظام کو نقصان پہنچ سکتا ہے۔

واضح رہے کہ امارات کا نام اکثر گنیز بک آف ریکارڈز میں آتا رہتا ہے اور پہلی بار ایسا1955 میں ہوا تھا، سال 1955سے اب تک گنیز بک آف ورلڈ ریکارڈز کی 143 ملین کاپیاں فروخت ہوئی ہیں۔

Comments

یہ بھی پڑھیں