The news is by your side.

Advertisement

دبئی میں ایک ارب سے زائد درہم کا فراڈ کرنے والا گروہ گرفتار

ابو ظہبی: متحدہ عرب امارات کے شہر دبئی کی پولیس نے 1.6 ارب درہم کا فراڈ کرنے والے گروہ کو گرفتار کرلیا، گروہ کے پاس سے 150 ملین درہم اور 13 پرآسائش گاڑیاں ضبط کرلی گئیں۔

اماراتی ویب سائٹ کے مطابق دبئی پولیس نے دھوکہ دہی کے خطرناک ترین آپریشن میں کامیابی کا اعلان کیا ہے جس میں 1.6 ارب درہم کی دھوکہ دہی کرنے والے گروہ کو گرفتار کرلیا گیا۔

مذکورہ آپریشن کو ’لومڑیوں کا شکار 2‘ کا نام دیا گیا، گرفتار گروہ کا سرغنہ انسٹا گرام پر نہایت مقبول شخص ہے۔

مقامی میڈیا کے مطابق بین الاقوامی جعلساز گروہ کا سرغنہ افریقی ملک کا رامون عباس نامی شہری ہے اور ہاشبوبی کے نام سے مشہور ہے۔ اس پر دھوکہ دہی کے ذریعے لوگوں کی رقوم ہتھیانے کا الزام ہے۔

سرغنہ پر بیرون ملک منی لانڈرنگ کے جرائم ، اکاؤنٹ ہیک کرنے، آن لائن دھوکہ دہی کے لیے بہروپیا بننے، ای بینکنگ کے ذریعے رقم نکالنے اور مختلف لوگوں کے شناختی کارڈ چوری کر کے انہیں آن لائن دھوکہ دہی کے جرائم میں استعمال کرنے کے الزامات ہیں۔

پولیس تحقیقات کے مطابق گروہ نے امریکا اور یورپی ممالک سمیت متعدد ملکوں میں بڑے پیمانے پر لوگوں سے فراڈ کیا ہے۔

مذکورہ گروہ کی گرفتاری کے لیے ایف بی آئی اور نائجیریا کے سراغرسانوں کے درمیان مقابلہ چل رہا تھا کہ کون اسے پہلے گرفتار کرے گا، تاہم دونوں ممالک کے سراغرساں پیچھے رہ گئے اور دبئی پولیس ہاشبوبی اور اس کے گروہ کو اپنی نوعیت کے منفرد آپریشن کے ذریعے گرفتار کرنے میں کامیاب ہوگئی۔

گروہ کی گرفتاری میں 6 ٹیموں نے حصہ لیا، گرفتاری کے بعد بہت ساری اہم معلومات، قیمتی نوادر، خطرناک راز اور 150 ملین درہم برآمد کر کے ضبط کر لیے گئے، اندازہ لگایا گیا ہے کہ گروہ نے 1.6 ارب درہم اینٹھے جبکہ وہ 25 ملین درہم مالیت کی پرآسائش کاروں کے بھی مالک ہیں۔

دبئی پولیس کے ڈائریکٹر جنرل عبد اللہ خلیفہ المری نے بتایا کہ ہاشبوبی کے علاوہ منی لانڈرنگ اور آن لائن جعلساز گروہ کے 10 افراد پکڑے گئے ہیں۔

گروہ کے قبضے سے 12 کمپیوٹر، 47 اسمارٹ فون، 15 میموری کارڈ، 1 لاکھ 19 ہزار 580 دھوکہ دہی کی فائلوں، 19 لاکھ 26 ہزار 400 متاثرین کے پتوں پر مشتمل 5 ہارڈ ڈسک اور 13 پرآسائش کاریں بھی ضبط کی گئی ہیں۔

Comments

یہ بھی پڑھیں