ناکارہ پالیسیوں کی وجہ سے بنگلا دیش پاکستان سے علیحدہ ہوا، خورشید شاہ bangladesh
The news is by your side.

Advertisement

ناکارہ پالیسیوں کی وجہ سے بنگلا دیش علیحدہ ہوا، خورشید شاہ

روہڑی: قائد حزب اختلاف سید خورشید شاہ نے کہا ہے کہ افغانیوں کو پناہ دے کر ہم نے اپنی معیشت تباہ اور بیرونی قرضوں سے ملک کو تباہی کے دہانے تک پہنچایا، ناکارہ پالیسیوں کی وجہ سے بنگلا دیش علیحدہ ہوا۔

روہڑی میں پیپلزپارٹی کے یومِ تاسیس کی مناسبت سے منعقدہ تقریب میں خطاب کرتے ہوئے خورشید شاہ نے کہا کہ ضیاء الحق نے جمہوریت کو قتل کر کے ملک کی ترقی و تعمیر کو ختم کیا جس کے نتائج آج تک بھگتنے پڑ رہے ہیں۔

انہوں نے کہا کہ عوام کو نیا پاکستان ذوالفقار علی بھٹو نے دیا جبکہ آج گالی کی سیاست کر کے نیا پاکستان بنانے کی باتیں کی جارہی ہیں جو مستقبل کے لیے بہت خطرناک ہیں، خورشید شاہ نے کہا کہ پیپلزپارٹی ملک کی واحد جماعت ہے جو اپنے 50 سال مکمل کررہی ہے، پی پی نے بہت سی قربانیاں دیتے ہوئے لمبا اور کٹھن سفر طے کیا، ذوالفقار علی بھٹو کو کیوں شہید کیا گیا آج نوجوانوں کو یہ سوال پوچھنا چاہیے۔

انہوں نے مزید کہا کہ بھٹو عوامی لیڈر تھے اس لیے انہوں نے ہمیشہ کہا کہ میرا خون عوام کے لیے حاضر ہے، بی بی نے اپنی قیمتی جان دے کر قوم کو زندہ کیا، پی پی کے کارکنان نے 12 ، 12 سال سزائیں کاٹیں مگر کبھی کسی طاقتور اور جابر کے آگے نہیں جھکے، بلاول بھٹو اپنے نانا اور والدہ کے مشن کو جلا بخشی اس لیے وہی عوام کی امید ہیں۔

قائد حزب اختلاف نے کہا کہ عالمی ممالک پاکستان کے مخالف ہیں اُس کے باوجود ہم روس اور امریکا کی جنگ کا حصہ بن کر تباہ ہوگئے اور افغان مہاجرین کو پناہ دی ہم نے اپنی معیشت تباہ کی، دہشت گردی کیخلاف جنگ میں پاکستان نے کئی نقصان اٹھائے۔


 

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں