The news is by your side.

Advertisement

پاکستان میں پہلی ماحول دوست گڑیا، ننھی طالبہ کا بڑا کارنامہ

کیا آپ جانتے ہیں کہ پاکستان میں پہلی ماحول دوست گڑیا بنالی گئی ہے جس کانام "فضا” ہے، اس گڑیا کا شاندار آئیڈیا ننھی ایمان دانش کا ہے۔

ایمان دانش کا مقصد ہے کہ وہ اپنی گڑیا "فضا” کے ذریعے بچوں کو ماحولیاتی تبدیلیوں کے بارے میں آگاہ کریں اور انہیں ان کی ذمہ داریوں کا احساس دلائیں۔

کراچی کی رہائشی چوتھی جماعت کی طالبہ ایمان دانش خان موسمیاتی تبدیلیوں کے خلاف ایک سرگرم کارکن ہیں جو دنیا میں پلاسٹک سے بنے کھلونوں کو روئی اور کپڑے کے کھلونوں سے تبدیل کرنے کا عزم رکھتی ہیں۔

اے آر وائی نیوز سے گفتگو میں آٹھ سالہ ایمان نے بتایا کہ 1950 سے اب تک دنیا میں 83 ارب ٹن پلاسٹک بنایا گیا ہے، جس کا 91 فیصد اب دوبارہ استعمال کے قابل بھی نہیں رہا۔

ان کا کہنا تھا کہ پلاسٹک ماحول میں تحلیل نہیں ہوتا اور اسے گلنے کے لیے پانچ ہزار سال کا عرصہ لگتا ہے۔

ایمان نے کہا کہ اس کرہ ارض پر پلا سٹک کے باعث سمندری آلودگی ہوتی ہے اور سمندر میں پلاسٹک پھینکنےکے باعث سمندری حیات کو ناقابل تلافی نقصان پہنچتا ہے۔

اس کے علاوہ پلاسٹک سمندر میں کاربن ڈائی آکسائیڈ کے جذب ہونے اور آکسیجن کے اخراج کے عمل کو بھی متاثر کر رہا ہے جس کے باعث موسمیاتی تبدیلیوں کی رفتار میں بھی تیزی آگئی ہے۔

انہوں نے بتایا کہ انہیں گڑیوں سے کھیلنے کا شوق ہے مگر ان کو جو پہلی گڑیا ملی وہ پلاسٹک کی تھی جسے انہوں نے شلوار قمیص اور دوپٹہ پہنا کر پاکستانی گڑیا بنا دیا مگر بعد میں انہیں محسوس ہوا کہ وہ تو پلاسٹک کی گڑیا ہے اور انہوں نے اپنی کلاس میں پڑھا تھا کہ پلاسٹک ماحول کے لیے بہت خطرناک ہے تو انہوں نے سوچا کہ اگر ایک چیز ماحول کے لیے خطرناک ہے تو ان کے لیے کتنی خطرناک ہوگی۔

ایمان نے بتایا کہ شروع میں تو میں نے سوچا کہ پرانی گڑیائیں لے کر مرمت کرکے پلاسٹک کو دوبارہ استعمال کیا جائے مگر پھر مجھے لگا کہ اگر میں پرانی گڑیا لوں گی بھی تو وہ بھی تو پلاسٹک کی ہی ہوگی تو میں نے روئی اور کپڑے کے گڑیا بنائی اور اس کا نام "فضا” رکھا۔

فضا کی عمر دس سال ہے اور وہ میری تصوراتی کلائیمٹ ہیرو ہے جو کرہ ارض کو پلاسٹک سے پاک کرنے کا کام کرتی ہے۔

Comments

یہ بھی پڑھیں