The news is by your side.

Advertisement

موجودہ حکومت کے ابتدائی7ماہ پچھلے ادوار سے بہتر ثابت ہوئے، اقتصادی رپورٹ

اسلام آباد : حکومت کی اقتصادی حکمت عملی پر اپوزیشن کا پروپیگنڈا اپنی جگہ لیکن آزاد معاشی ادارے کچھ اچھی خبریں بھی سنا رہے ہیں، اے کے ڈی سیکورٹیز نے اپنی رپورٹ میں بتایا ہے کہ صورتحال اتنی بھی خراب نہیں جتنی کہ ظاہر کی جارہی ہے۔

رپورٹ کے مطابق کئی پہلوؤں سے موجودہ حکومت کےسات ماہ پچھلی حکومتوں کے ابتدائی چند ماہ سے بہترہیں،ملک میں اس وقت معاشی بدحالی کا شور برپا ہے جس میں اپوزیشن جماعتیں پیش پیش ہیں لیکن حقیقت کیا ہے؟

حکومت کی اقتصادی حکمت عملی پراپوزیشن کاپروپیگنڈا

حکومت کی اقتصادی حکمت عملی پراپوزیشن کاپروپیگنڈا اپنی جگہ لیکن آزاد معاشی ادارےکچھ اچھی خبریں بھی سنارہےہیں،اے کےڈی سیکورٹیزنےاپنی رپورٹ میں بتایاصورتحال اتنی بھی خراب نہیں جتنی ظاہرکی جارہی ہے،کئی پہلوؤں سےموجودہ حکومت کےسات ماہ پچھلی حکومتوں کےابتدائی چند ماہ سےبہترہیں

Posted by ARY News on Wednesday, April 10, 2019

اس حوالے سے ملکی اسٹاک مارکیٹ کے ایک بڑے اور معتبر نام  اے کے ڈی   سیکورٹیز لمیٹیڈ کی رپورٹ میں دودھ کا دودھ پانی کا پانی ہوگیا۔

رپورٹ کے اعداد و شمار بتاتے ہیں کہ پیپلزپارٹی دور حکومت کے پہلے سات ماہ میں شرح سود تیرہ جبکہ ن لیگ کے دور میں دس فیصد تھی۔ پی ٹی آئی کے پہلے سات ماہ میں بھی یہ شرح ن لیگ کے قریب قریب ہے۔

اچھی بات یہ ہے کہ پہلے ادوار میں درآمدات بڑھیں اور اب کم ہوئی ہیں۔ جہاں تک برآمدات کا تعلق ہے تو دونوں ادوار کے پہلے سات ماہ میں کمی ہوئی ن لیگ کے پہلے سات ماہ میں تجارتی خسارے میں اضافہ دیکھا گیا۔

پی ٹی آئی دور میں اس میں نمایاں کمی ریکارڈ کی گئی، پیپلزپارٹی نے مہنگائی کی شرح بائیس فیصد پر پہنچائی۔ ن لیگ کے دور میں آٹھ اعشاریہ آٹھ فیصد پر آئی،اب محض سات فیصد ہے یہ نتیجہ بھی باتوں نہیں اعداد و شمار کی بنیاد پر نکالا گیا ہے۔

پچھلے دور میں روپے کی قدر مصنوعی طور پرمستحکم رکھی گئی جس سے روپیہ تیس فیصد اوور ویلیوڈ ہوگیا،جس سے تجارتی اور جاری کھاتوں کے خسارے میں ہوشربا اضافہ ہوگیا۔

اب روپیہ اصل شرح پر لایا جارہا ہے جس کا اسٹیٹ بنک نے بھی اعتراف کیا ہے،  رپورٹ میں مہنگے خام تیل اور روپے کی بےقدری کے باعث گیس اور بجلی مزید مہنگی ہونے کا اشارہ بھی دیا گیا ہے۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں