The news is by your side.

Advertisement

اثاثوں کی تفصیلات نہ دینے پر 336 اراکین اسمبلی کی رکنیت معطل

اسلام آباد: اثاثوں کی تفصیلات جمع نہ کرانے والے سینیٹ وقومی اور صوبائی اسمبلیوں کے 336 ارکان کی رکنیت معطل کرتے ہوئے الیکشن کمیشن نے باضابطہ نوٹی فکیشن بھی جاری کردیا۔

تفصیلات کے مطابق الیکشن کمیشن نے اثاثوں کی تفصیلات جمع نہ کروانے والے سینیٹ و قومی اور صوبائی اسمبلی کے 336 اراکین کی رکنیت معطل کردی جن میں 22 سینیٹرز، 66 اراکین قومی اسمبلی جبکہ صوبائی اسمبلیوں میں پنجاب اسمبلی کے 137، سندھ کے 49 اراکین شامل ہیں۔

ترجمان الیکشن کمیشن نے اراکین کی رکنیت معطل کرتے ہوئے باضابطہ نوٹی فکیشن جاری کرتے ہوئے کہا کہ ’’معطل ارکانِ پارلیمنٹ کی قانون سازی میں حصہ نہیں لے سکتے‘‘۔

الیکشن کمیشن نے اراکین کو اثاثہ جات کی تفصیلات جمع کروانے کے لیے آج تک کی مہلت فراہم کی گئی تھی تاہم اثاثہ جات کی تفصیل نہ دینے والے اراکین کی رکنیت معطل کرتے ہوئے نوٹی فکیشن جاری کیا ہے،معطل ہونے والے ممبران میں قائد حزب اختلاف سید خورشید شاہ، پیپلزپارٹی کے سینیٹر سعید غنی، فہمیدہ مرزا ، پی ٹی آئی کے اعظم سواتی جبکہ تحریک انصاف کے پنجاب اسمبلی میں نامزد اپوزیشن لیڈر میاں محمود الرشید کی رکنیت معطل کی گئی ہے۔

علاوہ ازیں ایم کیو ایم کے خالد مقبول صدیقی، نسرین جلیل، بیرسٹر سیف سمیت حکومت کے کئی اہم رہنماؤں وزیر مملکت برائے پانی و بجلی عابد شیر علی، سینیٹر نہال ہاشمی، سائرہ افضل تارڑ، خرم دستگیر، مائزہ حمید، طارق فضل چوہدری اور عوامی مسلم لیگ کے سربراہ شیخ رشید کی رکنیت معطل کی گئی ہے۔

قبل ازیں الیکشن کمیشن کی جانب سے تمام سینیٹرز و اراکین اسمبلی کو ہدایت جاری کی گئی تھی کہ وہ اپنے اثاثہ جات کی تفصیلات جمع کروادیں، ان احکامات پر عمل کرتے ہوئے سینیٹ، قومی و صوبائی اسمبلی کے 1100 سے زائد اراکین نے اپنے اثاثہ جات کی تمام تفصیلات الیکشن کمیشن کو فراہم کردیں تھیں جن میں وزیر اعظم نوازشریف اور عمران خان بھی شامل ہیں۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں