ووٹ کی رازداری کا معاملہ: بابراعوان کا تحریری جواب مسترد -
The news is by your side.

Advertisement

ووٹ کی رازداری کا معاملہ: بابراعوان کا تحریری جواب مسترد

الیکشن کمیشن کا عمران خان کو بیان حلفی اور معافی نامہ جمع کرانے کا حکم

اسلام آباد: الیکشن کمیشن نے چیئرمین پی ٹی آئی کے خلاف ووٹ کی رازداری سے متعلق کیس میں بابراعوان کا تحریری جواب مسترد کرتے ہوئےعمران خان کو بیان حلفی اوران کا دستخط شدہ معافی نامہ جمع کرانےکی ہدایت کردی۔

تفصیلات کے مطابق چیف الیکشن کمشنرکی سربراہی میں بینچ نے پاکستان تحریک انصاف کے سربراہ عمران خان کے خلاف ووٹ کی رازداری کے معاملے پرازخود نوٹس کی سماعت کی۔

چیئرمین پی ٹی آئی کے وکیل بابراعوان نے الیکشن کمیشن میں تحریری جواب جمع کرایا جس میں کہا گیا ہے کہ عمران خان نے جان بوجھ کرووٹ نہیں دکھایا۔

بابراعوان کی جانب سے جمع کرائے گئے جواب میں کہا گیا ہے ان کی مرضی سے ووٹ کی تصاویر بھی نہیں لی گئیں، رش کے باعث مہرلگانے والی جگہ پردہ گرگیا تھا۔

الیکشن کمیشن آف پاکستان میں جمع کرائے گئے جواب میں کہا گیا کہ عمران خان نے پوچھا تھا کہاں کھڑے ہوکرمہرلگاؤں ، لہذا ووٹ کی رازداری ظاہر کرنے والا کیس ختم کرکے این اے 53 سے روکا گیا نوٹیفکیشن جاری کیا جائے۔

تحریری جواب مسترد

الیکشن کمیشن نے چیئرمین پی ٹی آئی کے وکیل بابراعوان کی جانب سے جمع کرائےگئے جواب کومسترد کرتے ہوئےعمران خان کو بیان حلفی سمیت ان کا دستخط شدہ معافی نامہ جمع کرانے کی ہدایت کردی۔

بعدازاں الیکشن کمیشن آف پاکستان نے پاکستان تحریک انصاف کے سربراہ عمران خان کے خلاف کیس کی سماعت کل تک ملتوی کردی۔

اس سے قبل آج عمران خان کی جانب سے ان کے وکیل بابراعوان الیکشن کمیشن میں پیش ہوئے۔ ان کا کہنا تھا کہ معاملہ لمبا نہیں کرنا چاہیے، پہلے ہی معذرت کرچکے ہیں۔

چیف الیکشن کمشنر کا کہنا تھا کہ ضابطہ اخلاق کی خلاف ورزی کا معاملہ اپنی جگہ ہے، ووٹ کی راز داری پرتحریری جواب دینا پڑے گا۔

خیال رہے کہ اس سے قبل اسلام آباد میں عمران خان کی اپنے وکیل بابراعوان سے ملاقات ہوئی جس میں الیکشن کمیشن میں زیر سماعت معاملے کے آئینی و قانونی نکات پرمشاورت کی گئی۔

پاکستان تحریک انصاف کے سربراہ عمران خان نے بابراعوان کو اپنے موقف سے آگاہ کیا۔

واضح رہے 25 جولائی کو انتخابات میں چیئرمین پی ٹی آئی عمران خان کواین اے 53 اسلام آباد کے پولنگ اسٹیشن میں میڈیا کے سامنے بیلٹ پیپرپرمہرلگانے پرالیکشن کمیشن نے نوٹس لیا تھا۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں