The news is by your side.

Advertisement

نااہلی ریفرنس : تحریک انصاف کے منحرف اراکین کی درخواستیں ناقابل سماعت قراردینے کی استدعا

اسلام آباد : تحریک انصاف کے منحرف اراکان نے الیکشن کمیشن میں تحریری جوابات جمع کرادیے اور نااہلی کی درخواستیں ناقابل سماعت قراردینے کی استدعا کر دی۔

تفصیلات کے مطابق الیکشن کمیشن میں قومی اسمبلی کے منحرف اراکین کی نااہلی ریفرنس پر سماعت ہوئی ، چیف الیکشن کی سربراہی میں 3 رکنی بینچ نے سماعت کی۔

پی ٹی آئی کے وکیل فیصل چوہدری نے جواب الجواب دینے کا موقف اپناتے ہوئے مزید مواد مہیا کرنے کا کہا ، جس پرچیف الیکشن کمشنر نے سوال کیا کہ کیا ریفرنس کے ساتھ میٹیریل لگایا نہیں ہوا۔
.
فیصل چوہدری کا کہنا تھا کہ عامر لیاقت کی جانب سے جواب جمع نہیں کرایاگیا، میں شواہد الیکشن کمیشن کے پاس رکھنا چاہتا ہوں ، اب کمیشن ٹریبونل ہے، اس میں شواہد کے بغیر کیسے چل سکتے ہیں۔

منحرف اراکین کے وکیل نے مزید مواد پراعتراض کرتے ہوئے پہلے درخواست کے قابل سماعت ہونے پر فیصلہ دینے کا موقف پیش کیا۔

پی ٹی آئی وکیل نے مزید کہا کہ ایم این ایز کی ڈکلیریشن علیحدہ ہے، ایم این ایز نے دوسری جماعت میں شمولیت اختیار کی ، مجھے مواد پیش کرنے کا موقع دیں ، میں سب پبلک دستاویز پیش کر رہا ہوں، میٹریل میں اسدعمر ،شاہ محمود قریشی کی ہدایات میں شامل ہیں۔

چیف الیکشن کمیشن نے ریفرنس کے ساتھ شواہد نہ جمع کرانے کی وجہ پوچھی تو فیصل چوہدری نے کہا کہ شواہد ممبران کیلئے نہیں، الیکشن کمیشن کےلئے تھے۔

ممبرسندھ کے استفسار پرپی ٹی آئی کے وکیل نے بتایاکہ منحرف ارکان نے دوسری جماعت میں شمولیت اختیار کی جس پرشوکازنوٹسزجاری کئے۔

چیف الیکشن کمشنر کا کہنا تھا کہ کہ پہلے درخواست کے قابل سماعت ہونے پرفیصلہ دینگے، کمیشن نے سماعت کل تک ملتوی کردی۔

منحرف ارکان پنجاب اسمبلی نے کمیشن میں جواب جمع کروایا جبکہ پی ٹی آئی وکلاء نے 25 اراکین پنجاب اسمبلی کو رکنیت معطل کرنے کی استدعا کی توچیف الیکشن کمشنر نے کہا کہ اونچا بول کر تاریخ نہیں لی جاسکتی ، منحرف ارکان کے دلائل جمعہ کو ہوں گے۔

الیکشن کمیشن میں منحرف ارکان پنجاب اسمبلی نے تحریری جوابات جمع کرادیے، جس کے بعد الیکشن کمیشن نے سماعت 13 مئی تک ملتوی کردی۔

Comments

یہ بھی پڑھیں