The news is by your side.

Advertisement

مریم نواز کو پارٹی عہدہ دینے کیخلاف پی ٹی آئی کی درخواست سماعت کے لیے منظور

اسلام آباد :الیکشن کمیشن  نے مریم نواز کو ن لیگ کا نائب صدر تعینات کرنے کیخلاف تحریک انصاف کی درخواست سماعت کیلئے منظور کرلی اور مریم نواز کو نوٹس بھی جاری کردیا۔

تفصیلات کے مطابق الیکشن کمیشن آف پاکستان میں چیف الیکشن کمشنر سردار محمد رضا کی سربراہی میں تین رکنی کمیشن نے مریم نواز کو ن لیگ کا نائب صدر بنانےکےخلاف تحریک انصاف کی درخواست پر سماعت کی۔

تحریک انصاف کےوکیل حسن مان الیکشن کمیشن کےسامنے پیش ہوئے۔

پی ٹی آئی کےوکیل نے الیکشن کمیشن کو بتایاتین مئی دوہزار انیس کو مریم نواز کو نائب صدر مقرر کیا گیا، چیف الیکشن کمشنر نے استفسارکیااس کو تقرر کہیں گے یا عہدے پر منتخب ہوئیں؟

وکیل نےموقف اختیارکیا اس عہدے کے لئے انٹرا پارٹی انتخابات نہیں کرائے گئے، تحریک انصاف کےوکیل کا کہنا تھا نیب کورٹ نمبر ون نے مریم نواز کو سات سال کی سزا اوردو ملین پاؤنڈ جرمانہ کیا، اسلام آباد ہائی کورٹ نے مریم نواز کی سزا معطل کی۔

وکیل نے کہا سپریم کورٹ کا فیصلہ ہے سزایافتہ شخص پبلک آفس نہیں رکھ سکتا،مریم نواز نائب صدر کا عہدہ رکھنے کی اہل نہیں ہیں۔

مزید پڑھیں : مریم نواز کو پارٹی عہدہ دینے کیخلاف پی ٹی آئی کی درخواست پر سماعت 27 مئی کو ہوگی

الیکشن کمیشن نے دلائل کے بعد مریم نواز کو نوٹس جاری کرتے ہوئے سماعت سترہ جون کے لئے مقرر کر دی۔

یاد رہے مریم نواز کے خلاف درخواست تحریک انصاف کے اراکین قومی اسمبلی کی جانب سے دائر کی گئی تھی، جس میں بیرسٹر ملیکہ بخاری، میاں فرخ حبیب، جویریہ ظفر اور کنول شوذب درخواست گزاروں میں شامل تھے ۔

درخواست میں کہا گیا تھا کہ مریم نواز احتساب عدالت سے سزا یافتہ ہیں، احتساب عدالت نے ان کو عوامی عہدے کیلئے نااہل قرار دیا، پارٹی عہدہ نجی حیثیت کا حامل نہیں ہوتا۔

درخواست میں مریم نواز کی بطور نائب صدر تقرری کے نون لیگی فیصلے کو آئین و قانون سے متصادم قرار دیا گیا تھا۔

یاد رہے پاکستان مسلم لیگ ن کی تنظیم نو کے تحت پارٹی عہدے داروں کا اعلان کیا تھا، جس کے مطابق سابق وزیر اعظم نواز شریف کی صاحب زادی مریم نواز پارٹی کا نائب صدر مقرر کیا گیا تھا جبکہ سابق وزیر اعظم شاہد خاقان عباسی مسلم لیگ ن کے سینئر نائب صدر ہوں گے۔

بعد ازاں شاہ محمودقریشی نے مریم نواز کو پارٹی عہدہ ملنے کے معاملے کو ہر سطح اٹھانے کا فیصلہ کرتے ہوئے کہا تھا عدالت سےسزایافتہ کوپارٹی عہدہ نہیں دیا جا سکتا ہے، مریم نواز کو سزا معطلی کا عارضی ریلیف ملا ہے، سزا برقرار ہے۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں