Imran توہین عدالت کیس، عمران خان کےناقابل ضمانت وارنٹ گرفتاری جاری
The news is by your side.

Advertisement

توہین عدالت کیس، عمران خان کےناقابل ضمانت وارنٹ گرفتاری جاری

اسلام آباد : الیکشن کمیشن نے توہین عدالت کیس میں عمران خان کےناقابل ضمانت وارنٹ گرفتاری جاری کردئیے۔ بابراعوان نے عمران خان کےخلاف فیصلے کوچیلنج کرنے کا اعلان کردیا۔

تفصیلات کے مطابق چیف الیکشن کمشنر کی سربراہی میں 5 رکنی بینچ نے عمران خان کیخلاف توہین عدالت کیس کی سماعت کی،  کیس کی سماعت ممبرکمیشن ارشاد قیصرکی آمد میں تاخیرکے باعث دیرسے شروع ہوئی۔

الیکشن کمیشن نے توہین عدالت کیس میں فیصلہ سناتے ہوئے عمران خان کے ناقابل ضمانت وارنٹ جاری کردیے اور انھیں گرفتارکرکے چھبیس اکتوبرکوپیش کرنےکاحکم دیا۔

الیکشن کمیشن نے عمران خان سےکراچی ایئرپورٹ پردیئےگئےبیان پربھی جواب طلب کرلیا ہے ، عمران خان نے پارٹی فنڈنگ کیس میں الیکشن کمیشن پرتعصب کے الزام عائد کیا تھا۔

بابر اعوان نے الیکشن کمیشن کےاحکامات کوفل بینچ میں چیلنج کرنے کا اعلان کرتے ہوئے کہا وارنٹ غیرقانونی اورغیرآئینی ہیں، الیکشن کمیشن نےایک حکم جاری کیاجس کےدوحصےہیں، پہلے حصے کے مطابق عمران خان وارنٹ گرفتاری جاری کیے پہلے جووارنٹ جاری کیے گئے تھے ہائیکورٹ نے وہ معطل کر رکھےہیں۔

انھوں نے کہا کہ عمران خان اورپی ٹی آئی نشانےپرہیں،الیکشن کمیشن میں نوازشریف کیخلاف کوئی کارروائی نہیں ہوئی، ہماراسوال ہےکون سےاختیارات ہیں جووارنٹ جاری کیےگئے، عدالت کےفیصلےتک وارنٹ جاری کرنے کا بھی اختیارنہیں تھا۔

بابر اعوان نے مزید کہا کہ عمران خان اورپی ٹی آئی کیخلاف فیصلےتعصب کی بنیادپرہوتےہیں، ایک ہی مقدمےمیں وارنٹ معطل کیےگئےدوبارہ جاری ہوئے، وارنٹ عدالت کےفل بینچ کےحکم پرمعطل کیےگئےتھے، کیایہ فل بینچ کی توہین عدالت بنتی ہےیانہیں معاملہ دیکھیں گے، پی ٹی آئی کسی کیس کودرمیان میں نہیں چھوڑےگی، پاکستان کوفوری طورنئےمینڈیٹ کی ضرورت ہے۔


مزید پڑھیں : توہین عدالت کیس ، عمران خان کے وارنٹ گرفتاری جاری


یاد رہے کہ الیکشن کمیشن نے توہین عدالت کیس میں پاکستان تحریک انصاف کے سربراہ عمران خان کے قابل ضمانت وارنٹ گرفتاری جاری کئے تھے اور عمران خان کو گرفتار کر کے پیش کرنے کا حکم دیا تھا۔

جس کے بعد عمران خان نے الیکشن کمیشن کی جانب سے جاری وارنٹ گرفتاری کو چلینج کیا تھا اور اسلام آباد ہائیکورٹ نے  الیکشن کمیشن کا عمران خان کی گرفتاری کا حکم نامہ معطل کردیا تھا۔


،

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں