site
stats
پاکستان

نااہلی کیس، عمران خان اور کیپٹن صفدر سے جواب طلب

اسلام آباد: نااہلی سے متعلق ریفرنس پر الیکشن کمیشن نے عمران خان، جہانگیر ترین اور کیپٹن صفدر سے 22 نومبر تک جواب مانگ لیا ہے۔ 

تفصیلات کے مطابق الیکشن کمیشن میں عمران خان اور جہانگیر ترین اور کیپٹن (ر) صفدر کی نااہلی کیلئے دائر ریفرنس کی سماعت ہوئی، عمران خان کے وکیل الیکشن کمیشن میں پیش ہوئے، تحریک انصاف کے چیئرمین عمران خان کے وکیل نے موقف اپنایا کہ درخواست گزار الیکشن کمیشن میں حاضر نہیں جس کا مطلب یہ ہے کہ اسے اس کیس میں کوئی دلچسپی نہیں لہذٰ ا اس کیس کو خارج کیا جائے۔

چیف الیکشن کمشنر نے دلائل سننے کے بعد 22نومبر تک عمران خان کو جواب جمع کرانے کی ہدایت کرتے ہوئے درخواست گزار کو بھی نوٹس جاری کرد یا۔

مسلم لیگ ن کے طلال چوہدری اور دیگر کی جانب سے عمران خان اور جہانگیر ترین کے خلاف ریفرنسز دائر کیے گئے تاہم درخواست گزاروں کی طرف سے الیکشن کمیشن میں کوئی پیش نہیں ہوا۔

جہانگیر ترین نا اہلی ریفرنس

جہانگیر ترین کے وکیل نے الیکشن کمیشن سے نااہلی ریفرنس مسترد کرنیکی درخواست کرتے ہوئے کہا کہ اسپیکر نے میرے موکل کو سنے بغیر ہی ریفرنس الیکشن کمیشن کو بھجوایا،الزامات لگانے والے درخواست گزار خود بھی غیر حاضر ہیں۔

کیپٹن صفدر نااہلی ریفرنس

بعد ازاں الیکشن کمیشن میں مسلم لیگ ن کے رکن قومی اسمبلی کیپٹن صفدر کے خلاف صلاح الدین ترمزی کی نااہلی ریفرنس پر سماعت ہوئی، سماعت کے دوران کیپٹن صفدر اور انکے وکیل پیش نہیں ہوئے جس پر چیف الیکشن کمشنر نے اظہار برہمی کرتے ہوئے کیپٹن صفدر سے بھی 22نومبر کو جواب طلب کرلیا گیا اور سماعت ملتوی کر دی۔

پی ٹی آئی کے وکیل فیصل چوہدری نے میڈیا کو بتایا کہ درخواست گزار الیکشن کمیشن کو مذاق نہ بنائیں دلچسپی نہیں رکھتے تو درخواست خارج کردیں۔

درخواست گزار کی عدم موجودگی پر چیف الیکشن کمشنر جسٹس ریٹائرڈ سردار رضا محمد خان نے سماعت ملتوی کردی۔

دوسری جانب الیکشن کمیشن میں سینیٹر لیاقت ترکئی کے خلاف بشری گوہر کی درخواست پر سماعت 7دسمبر تک ملتوی کردی گئی، لیاقت ترکی کو جواب جمع کرنے کی ہدایت کی گئی۔

ریفرنس کا واحد مقصد چیئرمین تحریک انصاف کو بلیک میل کرکے خاموش کروانا تھا، ںعیم الحق

پی ٹی آئی کے ترجمان نعیم الحق نے اپنے رد عمل میں کہا ہے کہ ایاز صادق کی جانب سے الیکشن کمیشن کو بھجوائے گئے ریفرنس سے خود حکومت کنارہ کشی اختیار کر رہی ہے، ریفرنس جھوٹ پر مبنی تھا، ریفرنس داخل کروانے والا درباری ٹولہ اب پیروی کرنے سے گھبرا رہا ہے۔

انھوں نے کہا کہ مسلسل دوسری سماعت سے غیر حاضر رہنے پر کمیشن کو درباریوں کو وارننگ جاری کرنا پڑی، ریفرنس داخل کروانے والوں کو اب پیروی کیلئے گھسیٹ گھسیٹ کر لانا پڑ رہا ہے۔

انھوں نے کہا کہ ریفرنس کا واحد مقصد چیئرمین تحریک انصاف کو بلیک میل کرکے خاموش کروانا تھا۔ عمران خان کیخلاف جس فورم پر بھی جائیں گے مایوسی کے علاوہ کچھ نہیں ملے گا۔

Print Friendly, PDF & Email
20

Comments

comments

اس ویب سائیٹ پر موجود تمام تحریری مواد کے جملہ حقوق@2018 اے آروائی نیوز کے نام محفوظ ہیں

To Top