The news is by your side.

Advertisement

اسلاموفوبیا کے سدباب کیلئے مؤثر اقدامات اٹھانے کی ضرورت ہے، شاہ محمود قریشی

اسلام آباد : وزیرخارجہ شاہ محمود قریشی نے کہا ہے کہ پُرامن افغانستان خطے کے امن و استحکام کیلئے ناگزیر ہے، افغانستان میں مستقل قیام امن کےلیے نتیجہ خیز مذاکرات اہم ہیں۔

ان خیالات کا اظہار شاہ محمود قریشی نے وزارت خارجہ میں مشاورتی کونسل برائے امور خارجہ کے 15 ویں اجلاس کی صدارت کی کرتے ہوئے کیا، اجلاس کے دوران خطے میں امن و امان کی صورتحال پر تبادلہ خیال کیا جبکہ اسلاموفوبیا سمیت خارجہ پالیسی سے متعلق علاقائی و عالمی امور پر بھی گفتگو کی گئی۔

وزیر خارجہ نے بھارت کی دہشت گردانہ کارروائیوں کی پشت پناہی سے آگاہ کیا اور ریاست مخالف گروہوں کی معاونت کے ٹھوس شواہد بھی شرکا کو پیش کیے جبکہ

پاکستان میں دہشت گردی میں بھارتی حکومت کے ملوث ہونے کے ناقابل تردید شواہد و ثبوت دئیے۔

اس موقع پر وزیر خارجہ کا کہنا تھا کہ وزیر اعظم کے جنرل اسمبلی سے خطاب کو دنیا بھر میں پذیرائی ملی ہے۔

ان کا کہنا تھا کہ پُرامن افغانستان خطے کے امن و استحکام کیلئے ناگزیر ہے اسی لیے افغانستان میں مستقل قیام امن کےلیے نتیجہ خیز مذاکرات اہم ہیں۔

شاہ محمود قریشی کا کہنا تھا کہ پاکستان افغانستان و خطے میں قیام امن کےلیے کاوشیں جاری رکھے گا۔

اجلاس کے دوران وزیر خارجہ نے ایرانی وزیر خارجہ کے حالیہ دورہ پاکستان سے متعلق بھی آگاہ کیا، انہوں نے بتایا کہ بوسنیا کے صدر کا دورہ پاکستان سے تعاون کو مزید فروغ ملے گا۔

وزیر خارجہ نے اسلاموفوبیا سے متعلق کہا کہ او آئی سی سیکریٹری جنرل سمیت مختلف ممالک سے اسلاموفوبیا کا معاملہ اٹھایا ہے۔

انہوں نے مزید کہا کہ اسلاموفوبیا کے سدباب کےلیے موثر اقدامات اٹھانے کی ضرورت ہے۔

Comments

یہ بھی پڑھیں