جب تک تسلی نہیں ہوگی ٹی 10 لیگ کی حمایت نہیں کروں گا، احسان مانی -
The news is by your side.

Advertisement

جب تک تسلی نہیں ہوگی ٹی 10 لیگ کی حمایت نہیں کروں گا، احسان مانی

جب آئی سی سی کا صدر تھا تو بھارت نے بہت پریشر ڈالا، پھر بھی ان کے ساتھ زیادتی نہیں کی: چیئرمین پی سی بی

دبئی: چیئرمین پاکستان کرکٹ بورڈ احسان مانی نے کہا ہے کہ لیگ سے متعلق پی سی بی کے پاس کوئی معلومات موجود نہیں اس لیے جب تک انھیں تسلی نہیں ہوگی وہ ٹی 10 لیگ کی حمایت نہیں کریں گے۔

پی سی بی کے چیئرمین نے دبئی میں نیوز کانفرنس کے دوران کہا کہ ٹی 10 لیگ سے متعلق معلومات میسر نہیں کہ ان کے اسپانسرز کون ہیں، فرنچائز کس کے پاس ہے، لیگ کے لیے پیسا کہاں سے آ رہا ہے، تسلی ہونے تک اپنے کھلاڑی ٹی 10 لیگ میں نہیں بھیجے جائیں گے۔

چیئرمین نے مزید کہا کہ انٹرنیشنل کرکٹ کونسل (آئی سی سی) سے ٹی 10 لیگ سے متعلق معلومات مانگی ہیں، لیگ صرف پیسوں کے لیے نہیں کھیلنا چاہیے۔

پاک بھارت تعلقات سے کرکٹ پر اثر نہیں پڑے گا: احسانی مانی

احسان مانی نے کہا کہ پاکستان میں کوئی سیکورٹی خدشات نہیں ہیں، وزیرِ اعظم نے بھارتی بیانات کے جواب میں بیان دیا، کرکٹ میں سیاست کا عمل دخل نہیں ہونا چاہیے۔

انھوں نے کہا ’جب آئی سی سی کا صدر تھا سب کو برابر کی نظر سے دیکھتا تھا، بھارت پریشر ڈالتا رہتا تھا لیکن میں نے کبھی ان سے زیادتی نہیں کی، میرے دروازے ہمیشہ کھلے ہوتے ہیں۔‘

پریس کانفرنس میں پی سی بی چیئرمین نے کہا کہ وہ پی ایس ایل میں شفافیت لانا چاہتے ہیں، پی ایس ایل کی کمیٹی میں فرنچائز کے 2، 2 نمائندے ہوں گے، 20 اکتوبر کو آئی سی سی سے ٹیموں کو پاکستان لانے پر بات کروں گا۔

ان کا کہنا تھا کہ ڈومیسٹک کرکٹ کو ری اسٹرکچر کرنے پر کام جاری ہے، ڈومیسٹک کرکٹ کی بہتری کے لیے ٹاسک فورس بن چکی، کام بھی شروع ہوگیا، ہر کھلاڑی پی ایس ایل کے علاوہ ایک غیر ملکی لیگ کھیل سکتا ہے۔


یہ بھی پڑھیں:  خواجہ سراؤں کی تقریب میں بھارتی کرکٹر کی زنانہ لباس میں شرکت


احسان مانی نے خواہش کا اظہار کیا کہ پاکستان ٹیم 3 ٹیسٹ میچز سے کم سیریز نہ کھیلے، 2021 سے 2023 تک پاک بھارت سیریز شیڈول ہیں، کرکٹ کی بہتری کے لیے پاک بھارت کرکٹ کا ہونا ضروری ہے، پاک بھارت بورڈ کے درمیان تعلقات دوبارہ بہتر بنانے ہیں۔

کرکٹ کی بہتری کے لیے پاک بھارت کرکٹ کا ہونا ضروری ہے: احسان مانی

انھوں نے کہا کہ بھارتی بورڈ کے ارکان سے بات چیت ہوئی ہے، کھیل کسی ایک فرد یا سیاست سے بڑا ہے، سیاست میں کیا چل رہا ہے اس سے مطلب نہیں ہونا چاہیے، کرکٹ ہونی چاہیے، پاک بھارت تعلقات سے کرکٹ پر اثر نہیں پڑے گا۔

احسان مانی کا کہنا تھا کہ وہ ایمریٹس یا کسی لیگ کے خلاف نہیں ہیں۔ انھوں نے کہا پاکستانی کھلاڑیوں کا پی ایس ایل میں کھیلنا لازمی ہے۔

چیئرمین پی سی بی نے واضح کیا کہ وہ کسی کو کوئی چیز چھپانے نہیں دیں گے، بورڈ کے تمام مالی معاملات پی سی بی کی ویب سائٹ پر ہوں گے۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں