The news is by your side.

Advertisement

جیکب آباد: زمین کا تنازہ‘ آٹھ افرادقتل تین زخمی‘ بارہ افراد زیر حراست

جیکب آباد: زرعی زمین کے تنازعے پر رند اور سومرو قبائل میں تصادم کے نتیجے میں آٹھ افراد قتل اور تین افراد زخمی، پولیس نے بارہ مشتبہ افراد کو حراست میں لے کر جائے وقوعہ پر کیمپ قائم کرلیا۔

پولیس کے مطابق جیکب آباد کی تحصیل گڑھی خیرو کے قریب تھانہ ’پنہو بھٹی‘ کی حدود ’دیہہ مائری‘ میں سرکاری زرعی زمین پر سومرو، رند اور ڈاہانی قبائل کے درمیان تصادم ہوگیا جس کے نتیجے میں سومرو قبیلے کے چھ افراد موقع پرجاں بحق اور تین افراد زخمی ہوگئے جبکہ ڈاہانی قبیلے کا ایک شخص جان بحق اور ایک زخمی ہوگیا۔

واقعی کی اطلاع ملتے ہی ڈی ایس پی گڑھی خیرو کی قیادت میں پولیس کی بھاری نفری نے جائے واردات پہنچ کر مقولین کی لاشیں اپنی تحویل میں لے کر زخمیوں کو گڑھی خیرو تعلقہ اسپتال اور لاڑکانہ منتقل کیا جہاں پرزخموں کی تاب نا لاتے ہوئے ڈاہانی قبیلے کا ایک زخمی بھی چل بسا۔

ایس ایس پی ساجد کھوکھر نے بھاری پولیس نفری کے ہمراہ موقع واردات پر پہنچ کر صورتحال پر قابو پالیا اور بارہ مشتبہ افراد کو حراست میں لے لیا۔

ایس ایس پی ساجد کھوکھر نے میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے بتایا کہ چارسو ایکڑ سرکاری زرعی زمین کا تین روز قبل قبائلی سردار منظور خان پنہور کی سربراہی میں جرگہ کیا گیا تھا جس میں مذکورہ زمین سومرو، رند اور ڈاہانی قبائل کے درمیان تین حصوں مین تقسیم کردی گئی تھی۔ جرگے کے فیصلے پر عمل نہ ہونے کے باعث مذکورہ واقعہ پیس آیا ہے۔

ایس ایس پی کے مطابق بارہ مشتہ افراد کو حراست میں لے کر تفتیش شروع کردی گئی اور مذکورہ زمین کا تنازع حل ہونے تک ایس ایچ گڑھی خیرو کی سربراہی میں پولیس کی جانب سے جائے وقوعہ پر پولیس کا کیمپ قائم رہے گا۔

Print Friendly, PDF & Email

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں