یو اے ای میں آٹھ ماہ کا بچہ بطور’ خوشی کا سفیر‘ تعینات eight-month-old-baby-boy-to-appoint-a-happiness-executive-in-uae
The news is by your side.

Advertisement

یو اے ای میں آٹھ ماہ کا بچہ ’ خوشی کا سفیر‘ تعینات

ابو ظہبی : متحدہ عرب امارات کے ادارے جنرل سول ایوی ایشن میں آٹھ ماہ کے کمسن بچے کو ’خوشی کا سفیر‘ تعینات کرنے پر امارات کی عدالت نے ڈائریکٹر سول ایوی ایشن سے معاملے کی وضاحت طلب کرلی۔

تفصیلات کے مطابق متحدہ عرب امارات کے دارالحکومت ابوظہبی کے پراسیکیوٹر جنرل نے سول ایوی ایشن حکام سے آٹھ ماہ کے کمسن بچے کو قومی ادارے میں ’خوشی کا سفیر‘ تعینات کرنے پر عدالت میں وضاحت جمع کروانے کا حکم دے دیا۔

جنرل پراسیکیوٹر کا اپنے بیان میں کہنا تھا کہ سول ایوی ایشن میں کمسن بچے کو ملازمت دینا اگرچہ تفریحی اقدام ہو، لیکن سوشل میڈیا پر تصاویر وائرل ہوئی ہیں۔ پراسیکیوٹر کو معاملے کی حقیقت سے آگاہی دینا ضروری ہے۔

 

. بالفيديو.. “الطيران المدني” تعين أصغر موظف سعادة في العالم عمره 8 أشهر الطفل محمد الهاشمي الذي ينشر البهجة والسعادة لكل من يراه ويلقاه، عينه المدير العام للهيئة العامة للطيران المدني، سيف محمد السويدي كأصغر تنفيذي سعادة في الهيئة بهدف نشر الإيجابية والسعادة. وقالت الهيئة لـ”الإمارات اليوم”،إن الطفل محمد الهاشمي الذي يبلغ من العمر 8 أشهر وابن احدى موظفات الهيئة يزور مكاتب الهيئة العامة يومياً في أوقات الدوام الرسمية ليبث روح السعادة والإيجابية. وذكرت الهيئة أن لديها مبادرات عديدة لزيادة السعادة والإنتاجية بين الموظفين منها صحية، رياضية واجتماعية وذلك بهدف نشر السعادة والإيجابية داخل الهيئة.

A post shared by الرمس نت (@alramsnet) on

 

سوشل میڈیا پر وائرل ہونے والی ویڈیو میں دیکھا جاسکتا ہے کہ ابوظہبی کی سول ایوی ایشن حکام کی جانب سے محمد ہاشمی نامی آٹھ ماہ کے کمسن بچے کو ’خوشی کا سفیر‘ تعینات کیا گیا ہے، جو دنیا کا سب سے کم عمر ترین ملازم ہے۔

دوسری جانب ابو ظہبی کی جنرل سول ایوی ایشن کے ڈائریکٹر جنرل سیف محمد ال سعویدی نے سوشل میڈیا پر وائرل ہونے والی ویڈیو کے حوالے سے عوام میں پیدا ہونے والی غلط فہمیوں پر معافی مانگی ہے۔

ان کا کہنا تھا کہ  ’ویڈیو میں دکھائی گئی جگہ ادارے کی نرسری ہے جو سول ایوی ایشن میں ملازمت کرنے والی خواتین کے بچوں کے لیے بنائی گئی ہے تاکہ وہ خوشگوار ماحول میں رہ سکیں‘۔

ڈائریکٹر جنرل سول ایوی ایشن نے عوام کی جانب سے کیے گئے سوالات کے جواب دیتے ہوئے کہا ہے کہ ’جنرل سول ایوی ایشن میں کسی بچے کو ملازمت نہیں دی گئی‘۔


خبر کے بارے میں اپنی رائے کا اظہار کمنٹس میں کریں‘ مذکورہ معلومات کو زیادہ سے زیادہ لوگوں تک پہنچانے کےلیے سوشل میڈیا پرشیئر کریں

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں