الیکشن کمیشن کے چاروں ممبران ریٹائرڈ ،الیکشن کمیشن عملی طور پر غیر فعال -
The news is by your side.

Advertisement

الیکشن کمیشن کے چاروں ممبران ریٹائرڈ ،الیکشن کمیشن عملی طور پر غیر فعال

اسلام آباد: الیکشن کمیشن کے چاروں ممبران ریٹائرڈ ہوگئے، جس کے بعد الیکشن کمیشن عملی طور پر غیر فعال ہوگیا ہے۔

تٖفصیلات کے مطابق الیکشن کمیشن کے چاروں صوبائی ممبران ریٹائرڈ ہوگئے، حکومت نئے ممبران کی بر وقت تقرری نہ کرسکی، ان ممبران کی تقرری کے حوالے سے آئینی ترمیم تو کردی گئی لیکن ممبران کا تقرر نہیں ہوا، جس کے باعث الیکشن کمیشن عملی طور پر غیر فعال ہوگیا ہے، اب چیف الیکشن کمشنر کے پاس انتخابات کرانے کا اختیار نہیں۔

الیکشن کمشن کے نئے ممبران کا تقرر 22 ویں ترمیم کے تحت کیا جائے گا, جس میں ریٹائرڈ ججوں کے علاوہ ٹیکنوکریٹ اور سابق بیورو کریٹ بھی ممبر بننے کے اہل ہوں گے۔ الیکشن کمشن کے ممبران کا تقرر اب 5 سال کے لیے کیا جائے گا۔

ذرائع کا کہنا ہے کہ الیکشن کمیشن کے ممبران کی تقرری پر حکومت اور اپوزیشن میں اختلافات پائے جاتے ہیں، صوبائی اراکین کی ریٹا ئرمنٹ کے بعد یہ سوال خاصا اہم ہے کہ مستقبل قریب میں ہونیوالے ضمنی انتخابات کا کیا ہوگا اور اسکی قانونی حیثیت کیا ہوگی۔

دوسری جانب الیکشن کمیشن کے ممبران کی تنخواہوں اور مراعات کا معاملہ پارلیمنٹ تک جا پہنچا ہے ، چیئرمین سینیٹ نے اس معاملے پر رپورٹ طلب کرلی ہے۔

واضح رہے کہ پنجاب سے جسٹس (ر) ریاض کیانی، سندھ سے جسٹس (ر) محمد روشن عیسانی، خیبر پی کے سے جسٹس (ر) شہزاد اکبر خان اور بلوچستان سے جسٹس (ر) فضل الرحمن چار سال کے لیے ممبر بنائے گئے تھے، ان ممبران نے 13 جون 2011 کو بطور ممبر الیکشن کمشن حلف اٹھایا تھا۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں