الطاف حسین کے کسی بھی عمل کی ذمہ دارمتحدہ نہیں، الیکشن کمیشن -
The news is by your side.

Advertisement

الطاف حسین کے کسی بھی عمل کی ذمہ دارمتحدہ نہیں، الیکشن کمیشن

اسلام آباد: الیکشن کمیشن آف پاکستان کے ذرائع نے کہا ہے کہ الطاف حسین کے کسی بھی عمل کی ذمہ داری متحدہ قومی موومنٹ پر عائد نہیں‌ہوتی، متحدہ کے آئین میں الطاف حسین کی کوئی آئینی حیثیت نہیں ہے۔

 ایم کیو ایم پاکستان فاروق ستار کے نام سے رجسٹرڈ ہے

زاہد مشوانی نمائندہ اسلام آباد کے مطابق ذرائع الیکشن کمیشن کا کہنا ہے کہ متحدہ قومی موومنٹ (ایم کیو ایم) نے  جون 2012ء میں اپنا آئین الیکشن کمیشن کے پاس جمع کرادیا تھا جس کے تحت ایم کیو ایم پاکستان فاروق ستار کے نام سے رجسٹرڈ ہے، فاروق ستار ایم کیو ایم کے آئینی لیڈر ہیں اور پارٹی معاملات پرجواب دہ بھی وہی ہیں جب کہ ان کے پاس ڈپٹی کنوینئر کا عہدہ بھی موجود ہے۔

متحدہ میں ایم کیو ایم کی کوئی آئینی حیثیت نہیں

آئین کے مطابق نسرین جلیل کے پاسب بھی ڈپٹی کنوینئر کا عہد ہے لیکن الطاف حسین کی کوئی آئینی حیثیت نہیں اور نہ ان کے پاس کوئی عہدہ ہے ان کے نام صرف قائد اور رہبر کے طور پر درج ہے جس کے بعد ان کے کسی بھی عمل کی ذمہ داری متحدہ قومی موومنٹ پر عائد نہیں کی جاسکتی اور نہ متحدہ قومی موومنٹ الطاف حسین کے کسی بھی عملی وضاحت یا جواب دہی کی ذمہ دار ہے۔

فاروق ستار کے پاس دو پارٹی عہدے ہیں

آئین کے مطابق فاروق ستار کے پاس ایم کیو ایم کے دو عہدے ہیں جن میں سے ایک ڈپٹی کنوینر کا عہدہ بھی ہے،کراچی آرگنائزنگ کمیٹی کے ذمہ دار خالد عمرہیں، کے پی کے اور گلگت کی ذمہ داری گل فراز خٹک اور اسلم آفریدی کے پاس ہے اسی طرح چاروں صوبوں کی آرگنائزنگ کمیٹیوں کے نام دے دیے گیے ہیں۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں