The news is by your side.

Advertisement

الیکشن کمیشن کے فیصلے جانبدار نہیں ہوتے، الیکشن کمشنر سندھ یوسف خٹک

کراچی: الیکشن کمشنر سندھ یوسف خٹک نے کہا ہے کہ الیکشن کمیشن کے فیصلے جانبدار نہیں ہوتے اور نہ کوئی تفریق کی جاتی ہے، حلقہ بندیوں سے متعلق پٹشنرز کے اعتراضات دور کئے جائیں گے۔

ان خیالات کا اظہار انہوں نے کراچی میں پریس کانفرنس کرتے ہوئے کیا، یوسف خٹک نے کہا کہ ووٹرز 2018 کے الیکشن میں بلا خوف حق رائے دہی استعمال کریں گے، ابتدائی انتخابی فہرستیں 2605 ڈسپلے سینٹرز پر آویزاں کردی گئی ہیں، فہرستوں میں ووٹرز اپنا نام چیک کرسکتے ہیں، فہرستیں 24 اپریل تک آویزاں رہیں گی۔

الیکشن کمشنر سندھ نے کہا کہ کسی شکایت کی صورت میں ڈسپلے سینٹرز میں فارم بھی موجود ہیں، فارم کے ذریعے ناموں کا اندراج، ووٹ خارج اور غلطی کی درستگی ہوگی، فارم الیکشن کمیشن کی ویب سائٹ سے بھی ڈاؤن لوڈ کیے جاسکتے ہیں جبکہ اپنا ووٹ چیک کرنے کے لیے 8300 پر ایس ایم ایس کیا جاسکتا ہے۔

یوسف خٹک نے کہا کہ الیکشن 2018 کے لیے عوام اپنا کردار ادا کریں، سندھ میں 2 کروڑ 20 لاکھ 66 ہزار 558 ووٹرز موجود ہیں، ڈسپلے سینٹرز قائم کرنے کا مقصد تمام اعتراضات دور کرنا ہیں، یکم مئی کو حتمی انتخابی فہرستیں جاری کی جائیں گی۔

انہوں نے کہا کہ نئے ایکٹ کے بعد پارٹیوں کی رجسٹریشن میں کمی آئی ہے، اوورسیز پاکستانیوں کے ووٹ کا معاملہ اتنا آسان نہیں، بیرون ملک پاکستانیوں کے ووٹ کے معاملے پر نادرا کام کررہا ہے، ووٹرز شناختی کارڈ پر درج موجودہ اور مستقل پتے پر ہی ووٹ درج کراسکتے ہیں۔


خبر کے بارے میں اپنی رائے کا اظہار کمنٹس میں کریں‘ مذکورہ معلومات کو زیادہ سے زیادہ لوگوں تک پہچانے کے لیے سوشل میڈیا پر شیئر کریں۔  

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں