site
stats
پاکستان

پچاس سے زائد مسلح مردو خواتین نے الیکٹرونکس کی دکانیں لوٹ لیں

ملتان : پچاس سے زائد مسلح مردو خواتین نے الیکٹرونکس مارکیٹ میں دھاوا بول دیا اور سامان لوٹ کر فرار ہوگئے۔ اس انوکھی واردات پر پولیس کا کہنا ہے کہ معاملہ پلاٹ پر قبضہ کاہے۔

دکانداروں نے واقعے پر احتجاج کیا ہے۔ ملتان میں فلمی انداز میں لوٹ مار کی واردات کی گئی جس  نے سب کو حیران کردیا، صبح پانچ بجے پچاس سے زائد مرداور خواتین نے الیکٹرانک مارکیٹ کی دو دکانو ں پر دھاوا بول دیا۔

کچھ لوگوں کے پاس اسلحہ بھی تھا ۔ گینگ نے ڈرامائی انداز میں پہلے گارڈز سے اسلحہ چھینا اور تشدد کا نشانہ بنایا، اس کے بعد تالے توڑے اور ایک بعد ایک دکان پر ہاتھ صاف کرتے رہے ۔

جس کا جو دل چاہا اس نے وہ اٹھایا۔ کسی کے ہاتھ پنکھا آیا۔۔تو کوئی گھریلو استعمال کے الیکٹرونک آئٹمز لے کر چلتا بنا۔ دیکھتے دیکھتے دونوں دکانیں خالی ہوگئیں۔

اس انوکھی واردات میں مشتعل افراد دکانوں سے تیرہ لاکھ اسی ہزار روپے،باٗئیس لاکھ کا الیکٹرونکس کا سامان اور ستر لاکھ روپے کے چیک لوٹ کر لے گئے۔

سنسنی خیز واردات کے مناظر سی سی ٹی وی کیمرے نے محفوظ کرلئے۔لیکن پولیس واردات کرنے والوں کو پکڑ نہیں سکی۔

پولیس کی لاپرواہی اور ملزمان کو گرفتار نہ کرنے پر انجمن تاجران نے روڈ بلا ک کر کے احتجاج کیا۔ مشتعل تاجروں نے سڑکوں کو ٹریفک کے لئے بند کر دیا اور پولیس کے خلاف شدید نعرے بازی کی پولیس نے وارادت کی جگہ کو قبضے کی جگہ قرار دے دیا ہے۔

Print Friendly, PDF & Email
20

Comments

comments

اس ویب سائیٹ پر موجود تمام تحریری مواد کے جملہ حقوق@2018 اے آروائی نیوز کے نام محفوظ ہیں

To Top