The news is by your side.

Advertisement

کلبھوشن کے خلاف ٹھوس شواہد ہیں، پھانسی ہو گی، عبد الباسط

نئی دہلی : بھارت میں تعینات پاکستانی ہائی کمشنر عبدالباسط کا کہنا ہے کہ کلبھوشن یادیو کے خلاف ٹھوس شواہد موجود تھے جس کی بناء پر سزائے موت سنائی گئی اور اسے اپیل کا حق بھی حاصل ہے۔

تفصیلات کے مطابق بھارت میں پاکستانی ہائی کمشنر عبد الباسط انڈین چینل کو انٹرویو دے رہے تھے انہوں دوران انٹرویو دوٹوک موقف اختیار کرتے ہوئے کلبھوشن یادیو اور سمجھوتہ ایکسپریس سمیت دیگر سوالوں پر میزبان کو لاجواب کردیا۔

پاکستانی ہائی کمشنر عبدالباسط نے کہا کہ کلبھوشن یاد یو پاکستان میں را کے لیے جاسوسی کر رہا تھا اور ہمارے ملک کو غیر مستکم کرنا چاہتا تھا جس کا اعتراف ویڈیو بیان میں کیا جب کہ مقدمے کے دوران بھی انہیں تمام تر قانونی سہولیات اور مدد بھی فراہم کی گئی۔

انہوں بتایا کہ کلبھوشن کا ٹرائل شفاف ہوا ہے اور ٹھوس شواہد حاصل ہونے پر سزا دی گئی تاہم اب بھی وہ سزا کے خلاف اپیل کرسکتا ہے جس کے لیے کلبھوشن کو وکیل کلبھوشن کو وکیل بھی مہیا کیا جائے گا۔

بھارت میں پاکستانی ہائی کمشنر عبدالباسط نے کہا ہے کہ کشمیر پاکستان اور بھارت کے درمیان سب سے بڑا تنازعہ ہے اور تنازعے کا حل اقوام متحدہ کی قراردادوں پر مشتمل ہے لیکن بھارت اقوام متحدہ کی قرار دادوں پر عمل نہیں کر رہا ہے،

انہوں نے کہا کہ پاکستان بھارت کے ساتھ اچھے تعلقات کا خواہاں ہے لیکن کلبھوشن یادیو اور سمجھوتہ ایکسپریس جیسے واقعات دوطرفہ تعلقات کو خراب کرنے کا باعث بنتے ہیں جس کے لیے بھارت کو اپنے رویے پر غور کرنا ہوگا۔

بھارتی اینکر کی جانب سے پوچھے گئے ایک سوال کے جواب عبدالباسط کا کہنا تھا کہ ممبئی حملے کی تحقیقات کے لیے پاکستانی جوڈیشل کمیشن کو بھارت آنے میں چار سال لگے ہیں اور یہ خاصا پیچیدہ معاملہ ہے جس کے لیے بھارت کو پاکستان کے ساتھ تعاون کرنا ہوگا۔

Print Friendly, PDF & Email

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں